مودی حکومت کے وزیراخلاقی بنیادوں پر استعفیٰ دیں :تیواڑی

20 اپريل 2017

نئی دہلی/یو این آئی/ کانگریس نے اجودھیا میں بابری مسجد کے انہدام معاملے میں سپریم کورٹ کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہوئے کل کہا کہ مودی حکومت کے ان وزیروں اور آئینی عہدوں پر فائز افرادکو اخلاقی اور ضمیر کی آواز کی بنیاد پر استعفیٰ دے دینا چاہئے جن پر عدالت نے مجرمانہ مقدمہ چلانے کا حکم دیا ہے ۔ کانگریس کے ترجمان منیش تیواری نے یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر میں معمول کی بریفنگ کے دوران ایک سوال کے جواب میں کہا کہ حالانکہ مودی حکومت میں اخلاقیات اور حساسیت کیلئے کوئی جگہ نہیں ہے لیکن یہ پورا معاملہ وزیر اعظم نریندر مودی کی اخلاقیات اور ان کے ضمیر کا سوال ہے ۔ ان کی حکومت کے ان وزیروں اور آئینی عہدہ پر فائز افراد کو اپنے ضمیر کی آواز اور اخلاقی بنیاد پر استعفیٰ دے دینا چاہئے جن کے خلاف مقدمہ چلانے کی ہدایت دی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عدالت کا فیصلہ اپنے آپ میں مکمل ہے اور قانون کو اپنا کام کرنا چاہئے ۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کانگریس کے لیڈروں نے محض الزام لگانے پر بھی استعفیٰ دیا ہے ۔ دریں اثنا کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا نے بابری مسجد انہدام معاملے میں سپریم کورٹ کے فیصلے کے مدنظر آبی وسائل کی مرکزی وزیر اومابھارتی کے استعفیٰ کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ راجستھان کے گورنر کلیان سنگھ کو اخلاقی بنیادوں پر اپنا عہدہ سے مستعفی ہوجانا چاہئے اور لال کرشن اڈوانی اور مرلی منوہر جوشی کو بھی سیاست سے سنیاس لے لینا چاہئے۔

تبصرے