ریاستی کمپنیاں براہ راست غیر ملکی قرض حاصل کرسکیں گی

20 اپريل 2017

نئی دہلی/یو این آئی/ حکومت نے ریاستوں کی مالی طور پر مستحکم کمپنیوں کو بڑے انفراسٹرکچر پروجیکٹوں کیلئے براہ راست دو طرفہ ایجنسیوں سے غیر ملکی قرض حاصل کرنے کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ وزیر اعظم نریندر مودی کی صدارت میں کل یہاں منعقدہ کابینہ کی میٹنگ میں اس سلسلے میں ایک تجویز کو منظوری دے دی گئی۔ وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے میٹنگ کے بعد صحافیوں کو بتایا کہ اب مالی طور پر مستحکم ریاستی سرکاری کمپنیوں کو بڑے انفراسٹرکچر پروجیکٹوں کیلئے سرمایہ اکٹھا کرنے کے واسطے ریاستی حکومتوں کی ضمانت نہیں دینی پڑے گی۔ اب اس طرح کی کمپنیاں براہ راست دو طرفہ ایجنسیوں سے مالی مدد حاصل کر سکیں گی۔انہوں نے کہا کہ اس فیصلے کا سیدھا فائدہ ممبئی علاقائی ترقیاتی اتھارٹی کو ہوگا۔ اسے ممبئی ٹرانس ھاربر لنک پروجیکٹ کے لئے جاپان انٹرنیشنل کوآپریشن ایجنسی ﴿ جے آئي سی اے ﴾ سے براہ راست قرض لینے میں مدد ملے گی۔ اس پروجیکٹ کی لاگت 17854کروڑ روپے ہے جس کے لئے جے آئی سی اے سے 15109کروڑ روپے کا قرض ملنے کا اندازہ ہے ۔انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں ہدایات کے مطابق ریاستوں کی کمپنیاں براہ راست قرض حاصل کرسکیں گی اور وہ براہ راست اس کی ادائیگی بھی کر سکیں گی۔ متعلقہ ریاستی حکومت اس کی گارنٹي دے گی اور حکومت ہند اس پر تصدیقی ضمانت دے گی۔ انہوں نے کہا کہ بڑے پروجیکٹوں کے لئے اکثر غیر ملکی مدد کی ضرورت ہوتی ہے ۔ اس کے پیش نظر یہ فیصلہ کیا گیا ہے ۔

تبصرے