مزاحمتی قائدین کیخلاف کریک ڈائون جاری کئی دیگر لیڈران نظربند کردئے گئے

20 مارچ 2017

سرینگر/ ضمنی پارلیمانی چنائو کے پیش نظر پولیس نے اتوار کو تحریک حریت کی ایک مجوزہ میٹنگ کو ناکام بنا نے کیلئے جنرل سیکریٹری محمد اشرف صحرائی، پیر سیف اللہ، ایاز اکبر، راجہ معراج الدین اور محمد اشرف لایا کو خانہ نظر بند رکھا جبکہ دفتر کو سیل کرکے کسی کو بھی اندر جانے کی اجازت نہیں دی گئی ۔ادھر تحریک حریت نے اس کارروائی کو قابل مذمت قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ انتظامیہ کی جانب سے یہ اقدام جمہوری اور سیاسی سطح پر کھلم کھلا اعتراف شکست ہے۔ تحریک حریت نے جنرل سیکریٹری محمد اشرف صحرائی، پیر سیف اللہ، ایاز اکبر، راجہ معراج الدین اور محمد اشرف لایا کو کل سے ہی اپنے اپنے گھروں میں نظربند رکھنے اور تحریک حریت کے مرکزی دفتر حیدرپورہ کو سی آر پی ایف اور پولیس کے مزید سخت محاصرے میں لے کر تنظیمی کارکنان اور دفتری عملے کو دفتر کے اندر جانے سے روکنے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی حکمرانوں، یہاں کی حکومت اور انتظامیہ کی طرف سے اس طرح کی روک لگانا جمہوری اور سیاسی سطح پر کھلم کھلا اعتراف شکست ہے کہ بھارتی حکومت سیاسی اور جمہوری سطح پر آزادی پسندوں کا مقابلہ کرنے کی ہمت نہیں رکھتی ہے اور اسی لیے اوچھے حربے آزما کر سرکاری طاقت/
 کا استعمال کرکے آزادی پسند قائدین کی سرگرمیوں پر روک لگائی جارہی ہے۔ تحریک حریت نے کہا کہ ابھی نام نہاد الیکشن کا صرف اعلان ہوا اور انتظامیہ اور حکمرانوں نے آزادی پسند قائدین اور عوام سے خوف زدہ ہوکر پوری وادی کو ایک بڑے جیل خانہ میں تبدیل کردیا۔ سرینگر، اسلام آباد، شوپیان، پلوامہ اور کولگام میں رات کے اندھیرے میں چھاپے ڈال کر جوانوں کو گرفتار کیا جارہا ہے اور ایسے حالات میں نام نہاد الیکشنوں کی حیثیت کو ایک فوجی مشق ہی کا نام دیا جاسکتا ہے۔ تحریک حریت نے جموں کشمیر کے آزادی پسند عوام سے اپیل کی کہ وہ بھارتی سامراج اور مقامی بھارت نواز سیاست دانوں کے کسی بھی فریب میں ووٹ کا ہرگز ہرگز استعمال نہ کریں اور جموں کشمیر کے عوام کے سینوں سے ابھی خون بہہ رہا ہے۔ ابھی بھارتی مظالم تشدد اور قتل وغارت سے ہمارے جوانوں کے زخم مندمل نہیں ہوئے ہیں اور یہ بے ضمیر ہماری دی گئی قربانیوں پر پانی پھیرنے کے لیے ووٹ کی بھیک مانگنے نکلے ہیں اور ان بھارت نواز سیاست دانوں کو ووٹ دینا لاکھوں قربانیوں کے ساتھ تاریخ کا سب سے بڑا کھلواڑ ہے۔ تحریک حریت نے محمد اشرف لایا کو نظربند رکھنے اور عدالت میں تاریخ پیشی ہر حاضر نہ کرنے کی مذمت کی۔

تبصرے