شہروگام طلبہ اور طالبات کی احتجاجی ریلیاں- پٹن پلہالن ، سوپور، دلنہ ، نادی ہل ، حاجن ، اجس اور دوسرے کئی مقامات پر احتجاج کرنیوالے طلبہ پر شلنگ اور پیلٹ چھروں کا بے تحاشہ استعمال

20 اپريل 2017

سرینگر/ جی ایم سوپوری / عازم جان / بشیر سمبلی / کے این ایس / جے کے این ایس /کالجوں کے بعد ہائر اسکندری اسکولوں میں زیر تعلیم طلبہ و طالبات نے فورسز زیادتیوں کے خلاف سڑکوں پر آکر احتجاجی مظاہرئے کئے جنہیں منتشر کرنے کیلئے اشک آور گیس کے گولے داغے گئے ۔ معلوم ہوا ہے کہ بومئی ہائر اسکنڈری اسکول ، پلہالن ہائر اسکنڈری اسکول ، دلنہ ہائر اسکنڈری اسکول ، کنگن ہائر سکنڈری اسکول ، اجس ہائر سکنڈری اسکولوں میں زیر تعلیم طلبہ وطالبات نے سڑکوں پر آکراحتجاجی مظاہرئے کئے اس دوران فورسز کارروائی میں متعدد افراد زخمی ہوئے ۔ وادی کے تعلیمی اداروں میں طلاب کے ہمہ گیر احتجاجی مظاہروں کا نہ تھمنے والا سلسلہ جاری ہے۔ نمائندے کے مطابق پلوامہ ڈگری کالج میں فورسز کی طرف سے طلاب پر عتاب کے خلاف وادی کے اطراف واکناف میں قائم ہائر اسکنڈری اسکولوں میں زیر تعلیم طلبہ و طالبات نے بدھوار کے روز سڑکوں پر آکر احتجاجی/جاری صفحہ نمبر ۹پر
 مظاہرئے کئے جنہیں منتشر کرنے کیلئے ایک دفعہ پھر طاقت کا استعمال کیا گیا ۔ نمائندے کے مطابق بومئی ہائر اسکنڈری اسکول میں زیر تعلیم طلاب نے سڑکوں پر آکر احتجاجی مظاہرئے کئے اس دوران پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے لاٹھی چارج کیا جس پر نوجوان مشتعل ہوئے اور انہوں نے پتھراو کیا ۔ معلوم ہوا ہے کہ فورسز نے احتجاج کر رہے طلاب کو منتشر کرنے کیلئے بے تحاشہ ٹیر گیس شلنگ کی جس کے نتیجے میں کئی افراد کے زخمی ہونے کی اطلاع موصول ہوئی ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ بومئی ہائر سکنڈری اسکول میں تصادم کے بعد طلبہ و طالبات نے فورسز زیادتیوں کے خلاف احتجاجی مظاہرئے کئے ۔ طلبہ کے مطابق بومئی سوپور میں پُر امن طورپر طلبا احتجاج کر رہے تھے کہ اس دوران پولیس وفورسز نے طالبات پر ٹیر گیس شلنگ کی جس کے وجہ سے کئی افراد زخمی ہوئے ۔ معلوم ہوا ہے کہ دلنہ بارہ مولہ ہائر اسکنڈری اسکول میں زیر تعلیم طلبہ وطالبات نے بھی فورسز زیادتیوں کے خلاف جونہی احتجاجی مظاہرئے کئے اس دوران مشتعل ہجوم کو منتشر کرنے کیلئے فورسز نے یہاں پر بھی ٹیر گیس شلنگ کی جس کی وجہ سے کئی طالبات بے ہوش ہو گئیں اور انہیں اسپتال منتقل کرنا پڑا۔ نمائندے کے مطابق اجس بانڈی پورہ ہائر اسکنڈری اسکول ، نادی ہل ہائر اسکنڈری اسکول میں زیر تعلیم طلبہ وطالبات نے بھی سرینگر بانڈی پورہ شاہراہ پر دھرنا دیا جس کے نتیجے میں گاڑیوں کی آمدورفت معطل ہو کر رہ گئی ۔ معلوم ہوا ہے کہ پولیس وفورسز نے یہاں پر بھی مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے طاقت کا استعمال کیا جس پر والدین نے شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ جمہوریت میں ہر ایک کو احتجاج کرنے کا حق ہے تاہم وادی کشمیر میں اب طلبہ وطالبات کو بھی احتجاج کرنے کی اجازت نہیں دی جار ہی ہے۔ ادھر پلہالن پٹن میں اُس وقت تشدد بھڑک اٹھا جب پلہالن ہائر اسکنڈری اسکول میں زیر تعلیم طلبہ نے سڑکوں پر آکر احتجاجی مظاہرئے کئے جنہیں منتشر کرنے کیلئے اشک آور گیس کے ساتھ ساتھ پلیٹ چھرے بھی داغے گئے ۔ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ پلیٹ چھروں کے باعث کئی افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات موصول ہوئی ہے۔نمائندے کے مطابق شمالی کشمیر کے اکثر و بیشتر ہائر اسکنڈری اسکولوں میں بدھوار کے روز زیر تعلیم طلاب نے سڑکوں پر آکر احتجاجی مظاہرئے کئے جس دوران فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے طاقت کا استعمال کیا جس پر عوامی حلقوں ، سیول سوسائٹیز نے شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ طالبات پر ڈنڈے برسانا ناقابل برداشت ہے اور ریاستی حکومت کو اس سلسلے میں اپنی پوزیشن واضح کرنی چاہئے کہ کیا وجہ ہے کہ طالبات کو احتجاج کرنے کی اجازت نہیں دی جار ہی ہے۔

تبصرے