شہر اور اسکے مضافات میں برف باری ، سرینگر- جموں شاہراہ تیسرے روز بھی ٹریفک کیلئے بند - سیاحتی مقامات پر منفی درجہ حرارت ، آج شام سے موسم میں بہتری کے امکانات

10 مارچ 2017 (11:33)

سرینگر کے ایم این پیر پنچال پہاڑی سلسلے کے آر پار رواں موسم کی تازہ برفباری اور موسلا دھار بارشوںنے معمول کی زندگی کو مفلوج کرکے رکھ دیااور اس کے نتیجے میں سرینگر جموں شاہراہ جمعہ کو مسلسل تیسرے روز بھی گاڑیوں کی آواجاہی کیلئے بند رہی۔تازہ برفباری کے بعد سردی کی شدید لہر نے ایک مرتبہ پھر وادی کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے، تاہم محکمہ موسمیات کا کہنا ہے سنیچر کی دوپہر سے موسم میں واضح بہتری کا امکان ہے۔ جواہر ٹنل کے آر پار گزشتہ کئی دنوں سے جاری بارشوں کے بیچ بالائی علاقوں میں برفباری بھی ہوئی، البتہ جمعہ علی الصبح سرینگرسمیت بیشتر میدانی علاقوں میں تازہ برفباری ہوئی۔ جب سرینگر کے لوگ نیند سے بیدار ہوئے تو شہر کی مضافاتی پہاڑیوں کے ساتھ ساتھ مکانوں اور دیگر تعمیرات کی چھتوں اور کھلے میدانوں میں برف کی ہلکی پرت بچھ گئی تھی۔برفباری کا سلسلہ مختصر مدت کیلئے جاری رہا،البتہ بارشیں وقفے وقفے سے دن بھر جاری رہیں۔ محکمہ موسمیات کے مطابق جمعہ کی دوپہر تک سرینگر میں قریب دو انچ ، بانہال میں6انچ، قاضی گنڈ میں5سینٹی میٹر،کوکرناگ میں7سینٹی میٹر، پہلگام میں3سینٹی میٹر، گلمرگ میں38سینٹی میٹر، بٹوت میں3انچ اور بھدرواہ میں3انچ تازہ برف ریکارڈ کی گئی ۔مجموعی طوروادی کے کم و بیش تمام اضلاع اور جواہر ٹنل کے اُس پار کئی علاقوں میںموسلا دھاربارشیں اور بالائی علاقوں میں برفباری ہوئی۔بارہمولہ ، کپوارہ ، گاندربل ، بڈگام اوربانڈی پورہ کے ساتھ ساتھ اننت ناگ،پلوامہ،کولگام اور شوپیان کے پہاڑی علاقوں سے تازہ برفباری کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ گلمرگ کی اونچی پہاڑیوں اور میدانوں میں تازہ برفباری سے سیاحوں میں مسرت کی لہر دوڑ گئی جہاںملکی اور غیر ملکی سیاح سرمائی کھیلوں کا بھر پور لطف اٹھا رہے ہیں ۔نمائندے نے بتایا کہ گلمرگ ،کونگہ ڈوری ، کھلن مرگ، افروٹ پہاڑیوں اور بابا ریشی کے ملحقہ علاقہ جات میں دوران شب تازہ برفباری ہوئی اور کچھ ایک مقامات پر ایک فٹ سے زیادہ تازہ برف ریکارڈ کی گئی۔کپوارہ میں زیڈ گلی، کیرن، فرکیاں گلی ، سادھنا گلی ، کوپرا، اوپر نیچیاں ، جبڑی اور شمس پورہ میںتازہ برف گری ہے۔اس کے علاوہ نوگام سیکٹر،چوکی بل ،میلیال ،مژھل اور اس کے مضافاتی علاقوںجبکہ بانڈی پورہ میں گریز اور اس کے گردونواح میں درمیانہ درجے کی برفباری کی اطلاعات ملی ہیں۔ادھر جنوبی کشمیر میںمغل روڑ پر کئی علاقوں میں دو فٹ سے زیادہ برف گری ہے۔مجموعی طور پیر پنچال کے دونوں طرف تازہ برفباری نے معمول کی زندگی کو مفلوج کرکے رکھ دیا ہے۔ تازہ برفباری کے نتیجے میں رات کے کم سے کم درجہ حرارت میںنمایاں کمی دیکھنے کو ملی ہے اور اہل وادی کوایک مرتبہ پھر سخت سردیوں کا سامنا ہے۔تازہ بارشوں اوربرفباری کے چلتے سرینگر میں رات کا کم سے کم درجہ حرارت منفی0.1، گلمرگ میں منفی0.6اور پہلگام میں منفی5ڈگری سیلشیس ریکارڈ کیا گیا۔لیہہ میں گزشتہ شب کا کم سے کم درجہ حرارت منفی6.8جبکہ کرگل میں منفی 5.2ڈگری سیلشیس رہا۔جموں خطے میں بھی تازہ موسمی حالات کے باعث سردی کی شدید لہر جاری ہے۔جموں میں کم سے کم درجہ حرارت10.3، کٹرہ میں7.6، بٹوت میں منفی0.3، بانہال میں 0.7 اور بھدرواہ میں منفی1.2ڈگری سیلشیس ریکارڈ کیا گیا۔ادھرمسلسل بارشوں کی وجہ سے سرینگر جموں شاہراہ پرواقع کرول ، مہاڑ ، سیری ، ڈگڈول، بیٹری چشمہ اور پنتھیال سمیت کئی مقامات پر پسیاں اور پتھر گر آنے کی وجہ سے شاہراہ بدھوار سے گاڑیوں کی آمدورفت کیلئے بند پڑی ہے ۔ جمعرات اور جمعہ کی درمیانی رات کو بھی شاہراہ کے مختلف علاقوں میں تیز بارشیں ہوئیں اور یہ سلسلہ جمعہ کوبھی وقفے وقفے سے جاری رہا جبکہ جواہرٹنل اور بٹوت کے مقام پر تازہ برفباری نے صورتحال کو مزید بگاڑ دیا ہے جس کے پیش نظر شاہراہ جمعہ کو بدستور تیسرے روز بھی گاڑیوں کی آمدورفت کے لئے بند رہی اور اس طرح وادی کا بقیہ دنیا کے ساتھ زمینی رابطہ ایک مرتبہ پھر منقطع رہا۔دریں اثنائ محکمہ موسمیات کے ڈائریکٹر سونم لوٹس نے کے ایم ا ین کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ وادی میں بارشوں اور برفباری کا سلسلہ سنیچر کی دوپہر تک جاری رہنے کا امکان ہے۔تاہم ان کا کہنا تھا کہ سنیچر کی شام سے موسم میں واضح بہتری متوقع ہے جس کے نتیجے میں تازہ بارشوں کا سلسلہ تھم جائے گا۔انہوں نے کہا کہ12سے14مارچ تک موسم عموماً صاف رہنے کا امکان ہے۔

تبصرے