خاتون ،بزرگ شہری، بی ایس ایف اہلکار سمیت6افراد لقمہ جل،تعداد138

جموںوکشمیر میں کورنا وباءسے اموات کا نہ تھمنے والاسلسلہ جاری - وادی میں124جبکہ جموں میں 14کورونامتاثرین کی موت ،عوام میں تشویش بڑھتی جارہی ہے

جے کے این ایس �سی این آئی

سرینگر/ وبائی بیماری کورنا وائرس سے اموات کا نہ تھمنے والے سلسلے کے بیچ بی ایس ایف اہلکار سمیت مزید6مریضوں کی موت کے ساتھ ہی جموںکشمیر میںمرنے والوں کی تعداد138تک پہنچ گیا ۔ادھر جموںکشمیر میں ہر گزرتے دن کے ساتھ اموات میں اضافہ اور کیسوں کی بڑھتی تعداد کے باعث لوگوں میں فکر و تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے ۔ جموں کشمیر میں کورنا وائرس کے کیسوں میں ہرگزرتے دن کے ساتھ اضافہ دیکھنے کو ملا رہا ہے جبکہ اموات کا سلسلہ بھی جاری ہے ۔سوموار کو وادی کشمیر میں کورنا وائرس نے مزید6مریضوں کی جان لی ۔جن میں ایک بی ایس ایف اہلکار بھی شامل ہے جس کے نتیجے مہلوکین کی تعداد 138تک پہنچ گئی ۔ سوموار کی صبح پہلے مرنے والے دو افراد کا تعلق ضلع بارہمولہ اور ضلع بڈگام سے تھا۔ٹنگمرگ بارہمولہ کے شہری کی عمر90سال جبکہ کرالہ پورہ بڈگام کے شہری کی عمر56سال تھی۔سی ڈی اسپتال کے میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر سلیم ٹاک نے بتایا کہ مختلف امراض میں مبتلاءبارہمولہ کا شہری26جون سے زیر علاج تھا اور وہ گذشتہ شب انتقال کرگیا۔ سکمز صورہ کے میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق جان کے مطابق بڈگام کا شہری آج صبح سویرے انتقال کرگیا اور وہ گردوں کی تکلیف میں مبتلاءتھا۔ اس کے بعد تیسری ہلاکت اوڑی کی خاتون کے بطور ہوئی ۔ سکمز صورہ کے میڈیکل سپر انٹنڈنٹ پروفیسر فاروق جان نے بتایا کہ55سالہ خاتون آج صبح سویرے چل بسی۔بونیار ا ±وڑی کی مذکورہ خاتون عارضہ قلب میں مبتلاءتھی۔جبکہ کورنا وائرس سے سوموار کو چوتھی ہلاکت 33بٹالین بی ایس ایف سے وابستہ اہلکار کی ہوئی ۔ ذرائع نے بتایا کہ پانتھ چوک سرینگر میں قائم 33بٹالین سے وابستہ بی ایس ایف اہلکار بی ایس ایف سیکٹر ہیڈ کواٹر میں کورنا سے متاثر ہونے کے بعد ازجاں ہو گیا ۔ اس طرح سے وادی کشمیر میں مزید چار ہلاکتیں ریکارڈ کی گئی جس کے ساتھ ہی جموں کشمیر میں مرنے والوں کی تعداد138تک پہنچ گئی ہے ۔ جن میںوادی میں سب سے زیادہ یعنی29 ہلاکتیں سرینگر ضلع میں رونما ہوئیں۔ ادھر کورنا وائرس سے اموات میں اضافہ اور ہر گزرتے دن کے ساتھ ہی کیسوں میں اضافہ کے باعث عوام میں فکر و تشویش کی لہر دوڑ رہی ہے۔خیال رہے گزشتہ جمعہ اورسنیچر کوپانچ پانچ ،اتوار کو6اورسوموار کوبعددپہرتک ایک خاتون سمیت 3علیل مردوزن اسپتالوں میں دم توڑ بیٹھے ۔ضلع بارہمولہ کے ٹنگمرگ علاقہ سے تعلق رکھنے والاایک90سالہ علیل بزرگ شخص اتوار اورسوموار کودوران شب دم توڑ بیٹھا۔سی ڈی اسپتال کے میڈیکل سپرانٹنڈنٹ ڈاکٹر سلیم ٹاک نے بتایاکہ ٹنگمرگ بارہمولہ کا90سالہ معمرشخص سی ڈی اسپتال سری نگرمیں 26جون سے زیرعلاج تھا۔انہوں نے بتایاکہ مذکورہ بزرگ شخص ہائی بلڈ پریشر،نمونیہ اورامراض قلب کیساتھ ساتھ کوروناوائرس میں بھی مبتلاءتھا۔ڈاکٹر سلیم ٹاک کاکہناتھاکہ 90سالہ معمرشخص رات کے 2بجے داعی اجل کولبیک کہہ گیا۔اس دوران بارہمولہ ضلع کے سرحدی تحصیل اوڑی کے بونیارعلاقہ کی ایک55سالہ خاتون سوموار کوصبح صادق کے وقت انسٹی چیوٹ آف میڈیکل سائنسز سری نگرمیں دم توڑ بیٹھی۔انسٹی چیوٹ کے میڈیکل سپرانٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق جان نے بتایاکہ بونیاراوڑی کی56سالہ خاتون امراض قلب اوردیگربیماریوں کیساتھ ساتھ مہلک وائرس میں بھی مبتلاءتھا۔انہوں نے کہاکہ مذکورہ خاتون سوموار کوصبح کے وقت اس دارفانی سے رحلت کرگیا۔ ڈاکٹر فاروق جان نے مزیدکہاکہ انسٹی چیوٹ میں زیرعلاج ضلع بڈگام کارہنے والا56سالہ شخص سوموار کوعلی الصبح دم توڑ بیٹھا۔انہوں نے کہاکہ مذکورہ شخص نمونیہ اوردیگر امراض میں مبتلاءہونے کیساتھ ساتھ کوروناوائرس کی لپیٹ میں آیاتھا۔ڈاکٹر جان کاکہناتھاکہ سوموار کوصبح صادق کے وقت 4بجے یہاں دم توڑ بیٹھا۔ادھر اتوار کوشام دیر گئے ضلع بانڈی پورہ کے رہنے والے ایک علیل شخص کی صدراسپتال میںموت واقعہ ہوئی ۔صدراسپتال کے میڈیکل سپرانٹنڈنٹ ڈاکٹر نذیرچودھری نے بتایاکہ مذکورہ شخص ہائی بلڈ پریشر اوردیگرامراض میں بھی مبتلا ءتھا۔سوموار کوتاحال یعنی سہ پہرتک تین افراد کی موت واقعہ ہوجانے کے بعدجموں وکشمیر میں مہلک وائرس کوروناسے ہونے والی اموات کی تعداد138تک پہنچ گئی ،جن میں سے124کاتعلق کشمیر وادی اورباقی 14متوفین کاتعلق صوبہ جموں سے تھا۔وادی میں سب سے زیادہ یعنی33اموات سرینگر میں ہوئی ہیں۔اموات کے معاملے میں شمالی ضلع بارہمولہ دوسرے نمبرپرہے ،جہاں کوروناوائرس نے ابتک25افرادکی جان لی ہے۔ کولگام ضلع میں16، شوپیان میں13، بڈگام ضلع میں10،جموںمیں 8 ،اننت ناگ میں11،کپوارہ ضلع میں6پلوامہ میں4  ڈوڈہ میں 2جبکہ گاندربل ،اودھم پور ،راجوری ،کٹھوعہ ،پونچھ اضلاع میں کوروناوائرس میںمبتلاءایک ایک متاثرہ شخص کی موت واقعہ ہوئی ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں