جنوبی کشمیر میں جنگجو مخالف آپریشنز جاری ترال میں جھڑپ ،جیش محمد کے 2مقامی جنگجو جاں بحق ضلع میں انٹر نیٹ سروس بند،آپریشن کامیابی کیساتھ انجام دیا گیا :آئی جی پی

کے این ایس � سی این ایس : سرینگر/ جنوبی کشمیر میں پولیس ،فوج و فورسز نے مشترکہ طور جنگجو مخالف آپریشن جاری رکھتے ہوئے جنگجوؤں کے زیر اثر جنوبی ضلع پلوامہ کے قصبہ ترال کے سیموہ علاقے میں ایک جھڑپ کے دوران جیش محمد نامی عسکری تنظیم سے وابستہ 2 مقامی جنگجو جاں بحق ہوئے ۔ انسپکٹر جنرل آف پولیس (آئی جی پی ) کشمیر زون،یہ جنگجو مخالف آپریشن کامیابی کیساتھ انجام دیا گیا جسکی وجہ سے فورسز کو جانی نقصان کا سامنا نہیں کرنا پڑا ۔پولیس ڈسٹرکٹ اونتی پورہ کے سیموہ ترال علاقہ میں منگل کی علی الصبح اس وقت گولیاں چلنے کی آوازیں آئیں جب فوج و فورسز نے علاقے کو دوران شب محاصرہ میں لیا۔ذرائع کے مطابق فوج وفورسز نے پمپوش کالونی علاقے کو سوموار اور منگل وار کی درمیانی رات کومحاصرہ میں لیا تھا۔ذرائع کے مطابق، پولیس ، فوج کی 42 آر آر اور سی آر پی ایف کی 180 بٹالین کی مشترکہ ٹیم نے عسکریت پسندوں کی موجودگی کے بارے میں معلومات پر سیموہ ترال میں مشترکہ طور پر ’کارڈن اینڈ سرچ آپریشن‘ شروع کیا۔ذرائع نے بتایا کہ سرچ آپریشن کے دوران علاقے میں موجود جنگجوؤں اور فوج وفورسز کے درمیان دوران شب ہی آمنا سامنا ہوا ،جس کے ساتھ ہی طرفین کے مابین گولیوں کا تبادلہ شروع ہوا ۔فوج وفورسزنے گاؤں کے تمام خارجی و داخلی راستوں کو سیل کرکے جنگجوؤں کے فرار کے راستے مسدود کردیئے ۔ذرائع نے بتایا کہ منگلوا ر کی صبح5بجے طرفین کے مابین شدید گولیوں کا تبادلہ ہوا اور ابتدائی مرحلے کے دوران ایک جنگجو جاں بحق ۔ذرائع کے مطابق گولیوں کے تبادلے کے دوران ایک جنگجو نے رہائشی مکان میں پناہ لی اور یہاں مکین افراد خانہ کو بھی اپنے ساتھ رکھا ،جسکی وجہ سے فو ج وفورسز کو کافی مزاحمت کا سامنا رہا ۔ذرائع نے بتایا کہ ایک اور ڈیڑھ بجے کے درمیان جنگجو فائرنگ کرتے ہوئے رہائشی مکان سے باہر آیا جسکے ساتھ ہی دوبارہ طرفین کے مابین گولیوں کا تبادلہ ہوا ۔ پولیس نے بتایا کہ جائے جھڑپ سے جاں بحق دونوں جنگجوؤں کی نعشیں اسلحہ وگولی بارود سمیت برآمد کی گئیں ۔ایک میڈیا رپورٹ کے مطابق انسپکٹر جنرل آف پولیس (آئی جی پی ) کشمیر زون ،وجے کمار نے یہ جنگجو مخالف آپریشن کامیانی کیساتھ انجام دیا گیا جسکی وجہ سے فورسز کو جانی نقصان کا سامنا نہیں کرنا پڑا ۔اسی رپورٹ میں ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا گیا تھا کہ جاں بحق جنگجو عسکری تنظیم’ انصار غزوة الہند ‘ سے وابستہ تھے ۔تاہم ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ جھڑپ میں جاں بحق ہوئے دونوں جنگجو مقامی ہیں اور یہ عسکری تنظیم جیش محمد سے وابستہ تھے ۔ نامہ نگار نے ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ ایک جاں بحق جنگجو سیر جاگیر ترال اور دوسرا اونتی پورہ پلوامہ سے تعلق رکھتا ہے ۔ سیر جاگیر ترال سے تعلق رکھنے والے جاں بحق جنگجو نے حال ہی میں جنگجوؤں کی صف میں شمولیت اختیار کی تھی ۔ضلع میں ممکنہ احتجاجی مظاہروں کے خد شات کے پیش نظر انٹر نیٹ سروس معطل کی گئی ۔کووڈ ۔19پروٹوکول کے مطابق جاں بحق جنگجوؤں کی نعشیں ورثاں کے حوالے نہیں کی جارہی ہیں ۔پولیس کی نگرانی میں جاں بحق جنگجوؤں کو مختلف مخصوص قبرستانوں میں سپرد خاک کیا جاتا ہے ۔ایک رپورٹ کے مطابق جنگجوؤں کے اہلخانہ کے چند افراد کو بھی آخری رسومات میں شرکت کرنے کی اجازت دی جاتی ہے ۔جاں بحق جنگجوؤں کی نماز جنازوں میں لوگوں کی بھاری شرکت ہوتی ہے ،جسکی وجہ سے اب جاں بحق جنگجوؤں کی نعشیں لواحقین کے سپرد نہیں کی جاتی ہیں ۔یاد رہے کہ اس سے قبل فوج نے پیر کے روز جموں و کشمیر کے مینڈھر پونچھ اور نوشہرہ راجوری میں لائن آف کنٹرول پر در اندازی کی دو کوششوں کو ناکام بناتے ہوئے13جنگجوؤں کو جاں بحق کرنے کا دعویٰ کیا تھا ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں