موٹر گاڑیوں سے متعلق ترمیمی بل راجیہ سبھا میں پیش

نئی دہلی ،31جولائی âیواین آئیáسڑیک ٹرانسپورٹ کے مرکزی وزیر نتن گڈکری نے بدھ کو راجیہ سبھا میں کہاکہ قومی شاہراہوں پر سڑک حادثات کو روکنے کے لیے 786بلیک اسپاٹ کی نشاندہی کی گئی ہے اور سڑکوں کو ٹھیک کرنے کے لیے عالمی بینک اور ایشیائی ترقیاتی بینک کی مددسے 14کروڑ روپئے کا پروجکٹ شروع کیاجائیگا۔مسٹر گڈکری نے موٹر وھیکل ترمیمی بل 2019کو بحث کے لیے پیش کرتے ہوئے یہ اطلاع دی ۔لوک سبھا پچھلے دنوں اس بل کو منظور کرچکی ہے ۔انھوں نے بتایاکہ ملک میں ہر سال تقریبا ڈیڑھ لاکھ لوگوں کی موت سڑک حادثات میں ہوتی ہے اور ان میں 65فیصد اموات 18سے 35سال کے لوگوں کی ہوتی ہے ،اس لیے ان اموات کی روک تھام کے لیے 786ایسے مقامات کی شناخت کی گئی ہے جہاں اکثر حادثات ہوتے ہیں جنھیں بلیک اسپاٹ کہاجاتاہے ۔ان سڑکوں کو ٹھیک کرنے کے لیے سات ہزار کروڑ روپئے کی ایشائی ترقیاتی بینک نے منظوری دی ہے ،باقی رقم کے لیے عالمی بینک کوتجویز پیش کی گئی ہے ۔انھوں نے بتایاکہ تمل ناڈو میں دوسال کے اندر سڑک حادثات میں 29فیصد کمی آئی ہے ، اس لیے تمل ناڈو نے جو تجربات کیے ہیں ، اسے پورے ملک میں نافذکیاجائیگا۔انھوں نے کہاکہ حکومت جلد ہی ایک ٹرانسپورٹ پالیسی بنائیگی اور یہ ریاستوں کے ساتھ صلاح مشورے کے بعد ہی تیارکی جائیگی ،یہ ریاستوں کے لیے لازمی نہیں ہوگی ۔
مسٹر گڈکری نے بتایا کہ سڑکوں پرجام اور آلودگی کو روکنے کے لیے غیر ممالک کی طرح زمین کی سطح سے اوپر بس چلانے کا حکومت کامنصوبہ ہے ۔یہ میٹرو سے سستاہے کیونکہ ایک کلومیٹر میٹرو لائن پر 350کروڑ روپئے خرچ ہوتے ہیں جبکہ اس میں صرف 50کروڑ روپئے خرچ ہونگے ۔انھوں نے ایوان میں جب اس بل کو پیش کیا تو کانگریس کے ارکان نے یہ کہاکہ اس بل میں خامیاں ہیں کیونکہ لوک سبھا سے جو بل منظور ہواہے اس میں تبدیلی کرکے اس ایوان میں پیش کیاگیاہے ،اس لیے یہ وہ بل نہیں ہے اور اس میں نئے پرویژن ہیں ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں