شوپیان میں فورسز آپریشن کے دوران نوجوان جسمانی تشدد کا شکار پٹن میں کار میں سوار 2جنگجو گرفتار،ترچھل پلوامہ اورژینہ بل میں جنگجو مخالف آپریشنز

سرینگر/ جے کے این ایس / آئند راولپورہ شوپیاں میںجنگجو مخالف آپریشن کے دوران ایک نوجوان کی ہڈی پسلی ایک کردی گئی۔ ژینہ بل پٹن میں گھر گھر تلاشی کے دوران مکینوں کے شناختی کارڈ باریک بینی سے چیک کئے گئے۔ ادھر پٹن میں کار میں سوار پاکستانی جنگجو کو گرفتار کیا گیا ہے۔  فورسز /جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
نے سوموار کو جنوبی ضلع شوپیان میں تلاشی آپریشن کے دوران ایک نوجوان کو مبینہ طور جسمانی تشدد کا شکار بنایا۔یہ واقعہ ضلع کے آئند راولپورہ نامی گائوں میں پیش آیا جہاں فورسز محاصرے کے دوران تلاشیاں لی جارہی تھیں۔ اطلاعات کے مطابق سرتاج احمد بٹ نامی مذکورہ نوجوان کو فورسز نے دورانِ آپریشن جسمانی تشدد کا نشانہ بنایا جس کے بعد اْسے زخمی حالت میں ضلع اسپتال شوپیان پہنچایا گیا۔سرکاری ذرائع کے مطابق فورسز کا آپریشن گائوں میں جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع کے بعد شروع کیا گیا تھا۔ادھر جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد سیکورٹی فورسز نے ژینہ بل پٹن علاقے کو محاصرے میں لے کر گھر گھر تلاشی لی۔ مقامی ذرائع کے مطابق فوج ، پولیس اور پیرا ملٹری فورسز نے کافی دیر تک علاقے کی تلاشی لی تاہم اس دوران کوئی قابل اعتراض شئے برآمد نہیںہو سکی۔ دفاعی ذرائع نے راولپورہ شوپیاں ااور ژینہ بل پٹن میں تلاشی آپریشن شروع کرنے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ کسی کی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی ۔ دفاعی ذرائع نے راولپورہ شوپیاں میں نوجوان کو تشدد کا نشانہ بنانے کے مقامی لوگوں کو مسترد کیا ہے۔ ادھر شمالی کشمیر کے پٹن میں سوموار کو فورسز نے ایک جنگجو کو اْس وقت گرفتار کرلیا جب وہ ایک کار میں سوارتھا۔فوج، سی آر پی ایف اور ایس او جی اہلکاروں کی ایک مشترکہ ٹیم نے ایک کار کو، جس پر دلی کا نمبر پلیٹ لگا تھا، تلاشی کیلئے چھینہ بل کے مقام پر روکا۔تلاشی کے دوران فورسز نے کار میں ڈرائیور سمیت دو افراد کو حرست میں لیا۔ادھرسیکورٹی فورسز نے شام دیر گئے ضلع پلوامہ کے ترچھل گائوں کو محاصرے میں لے کر بڑے پیمانے پر جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا ہے۔ دفاعی ذرائع نے اسکی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ عسکریت پسندوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد فورسز نے گائوں کو سیل کیا ہے۔ سوموار کی شام کو 55آر آر ، سی آر پی ایف اور ایس او جی پلوامہ نے ترچھل گائوں کو محاصرے میں لے کر لوگون کے چلنے پھرنے پر پابندی عائد کی ۔ مقامی ذرائع کے مطابق سیکورٹی فورسز نے ترچھل پلوامہ اور اُس کے ملحقہ علاقوں میں سیکورٹی فورسز کو تعینات کیا ہے اور کسی کو بھی گھروں سے باہر آنے کی اجازت نہیں دی جا رہی ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ لوگوں کی پیش قدمی کو روکنے کیلئے فورسز نے کانٹے دار تار بھی نصب کی ہیں ۔ دفاعی ذرائع نے ترچھل پلوامہ گائوں میں تلاشی آپریشن شروع کرنے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ مصدقہ اطلاع ملنے کے بعد ہی گائوں کو سیل کیا گیا ہے۔ دفاعی ذرائع نے بتایا کہ ترچھل کے ساتھ ساتھ آس پاس علاقوں میں بھی پہرے بٹھا دئے گئے ہیں جبکہ فرار ہونے کے تمام راستوں کو سیل کرکے لوگوں کو گھروں میں رہنے کی تلقین کی گئی ہے۔ آخری اطلاعات موصول ہونے تک علاقے میں جنگجو مخالف آپریشن جاری تھا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں