بیج بہاڑہ میں نیشنل کانفرنس کے بلاک صدر پر گولیاں چلائی گئیں، ہسپتال میں حالت نازک 
  نامعلوم بندوق برداروں کی تلاش

سرینگر/ یو پی آئی / جے کے این ایس /جبہاڑہ میں نامعلوم بندوق برداروں نے نیشنل کانفرنس کے بلاک صدر پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں وہ شدید طورپر زخمی ہوا اور اُس کو نازک حالت میں صدر اسپتال سرینگر منتقل کیا گیا۔ پولیس نے  /جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ آس پاس علاقوں کو محاصرے میں لے کر بڑے پیمانے پر تلاشی آپریشن شروع کیا ہے۔ ادھر سابق وزیر اعلیٰ اور نیشنل کانفرنس نائب صدر نے ٹویٹر کے ذریعے اس بات کی جانکاری دی کہ بجبہاڑہ میں این سی کے بلاک صدر کو گولیوں کا نشانہ بنایا گیا ہے۔  بجبہاڑہ کے دوپتہ یار علاقے میں اُس وقت سنسنی اور خوف ودہشت کا ماحول پھیل گیا جب نامعلوم مسلح افراد نے نیشنل کانفرنس کے بلاک صدر محمد اسماعیل وانی پر اندھا دھند فائرنگ کی جس کے نتیجے میں دو گولیاں اُس کے سینے میں پیوست ہوئیں ۔ نمائندے کے مطابق گولیوں کی آواز سنتے ہی آس پاس موجود لوگ جائے موقع پر پہنچے اور زخمی شخص کو فوری طورپر ضلع اسپتال اننت ناگ منتقل کیا گیا تاہم ڈاکٹروں نے حالت نازک قرار دے کر اُس کو صدر اسپتال منتقل کیا ۔ اسپتال ذرائع کے مطابق محمد اسماعیل کے سینے اور پیٹ میں دو گولیاں پیوست ہوئی ہے۔ واقعے کی اطلاع ملتے ہی پولیس کے سینئر آفیسران جائے موقع پر پہنچے اور آس پاس علاقوں کو محاصرے میں لے کر حملہ آوروں کی بڑے پیمانے پر تلاش شروع کی ۔ ذرائع کے مطابق فوج ، پولیس اور پیرا ملٹری فورسز نے ایک وسیع علاقے کو محاصرے میں لے کر گھر گھر تلاشی آپریشن شروع کیا ہے۔معلوم ہوا ہے کہ فوج نے بجبہاڑہ کے داخلی اور خارجی راستوں پر پہرے بٹھا کر ایک وسیع علاقے کو محاصرے میں لے کر جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا ہے۔ ادھر ریاست کے سابق وزیر اعلیٰ عمر عبدا ﷲ نے اپنے ٹویٹر ہینڈل پر جانکاری فراہم کرتے ہوئے بتایا کہ بجبہاڑہ میں نیشنل کانفرنس کے بلاک صدر پر فائرنگ کی گئی ہے۔ انہوںنے کہاکہ این سی بلاک صدر کی حالت تشویشناک بنی ہوئی ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں