وادی میں امن وقانون کی صورتحال جموں میں آج گورنر کی صدارت میں منعقد ہونے والے اجلاس میں غور ہوگا پنچایتی انتخابات کے دوران کشمیر میں اضافے دستے تعینات کرنے کا فیصلہ

سرینگر/ کے این ایس /رواں ماہ کی 17تاریخ سے منعقد ہونے والے پنچایتی انتخابات سے متعلق اُٹھائے گئے اقدامات کا تفصیلی جائزہ لینے کی خاطر گورنر ستیہ پال ملک کی صدارت میں ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ سرمائی دالخلافہ جموں میں منعقد ہورہی ہے جس میں ریاست جموں وکشمیر کی تازہ ترین سیکورٹی صورتحال کے علاوہ لائن آف کنٹرول اور بین الاقوامی سرحد پر حالیہ دراندازی سے متعلق سیکورٹی ایجنسیوں کے اعلیٰ حکام کے ساتھ تبادلہ خیال کیا جائے گا۔ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ میٹنگ میں جی او سی شمالی کمانڈ، خصوصی مشیر برائے گورنر، پرنسپل سیکرٹری داخلہ، ڈیوژنل کمشنر کشمیر ، آئی جی پی برائے سرینگر و جموں کے علاوہ دیگر سیکورٹی ایجنسیوں کے اعلیٰ حکام شامل ہوں گے۔ ریاست میں رواں ماہ کی 17تاریخ سے منعقد ہونے والے پنچایتی انتخابات کے سلسلے میں اُٹھائے گئے اقدامات کی تفصیلی جانکاری حاصل کرنے کی خاطر ریاستی گورنر ستیہ پال ملک کی صدارت میں سرمائی دارالخلافہ جموں میں آج ایک اہم میٹنگ منعقد ہورہی ہے جس میں ریاست گورنر کوپنچایتی انتخابات سے متعلق مختلف اُمور کی آگاہی کے ساتھ ساتھ ریاست جموں وکشمیر کی تازہ ترین سیکورٹی صورتحال سے روشناس کرایا جائے گا۔ کے این ایس کو ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ میٹنگ کے دوران لائن آف کنٹرول اور بین الاقوامی سرحد پر گزشتہ مہینوں کے دوران دراندازی کے بڑھتے واقعات پر بھی تبادلہ خیال کیا جائے گا۔ معلوم ہوا ہے کہ میٹنگ میں سیکورٹی اور انٹلی جنس ایجنسیوں کے اعلیٰ حکام کے ساتھ ساتھ انتظامیہ کے اعلیٰ افسران بھی موجود رہیں گے جو ریاستی گورنر کو موجودہ صورتحال کی جانکاری فراہم کریں گے۔ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ میٹنگ کے دوران رواں ماہ کی /جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
 17تاریخ سے منعقد ہونے والے پنچایتی انتخابات چھائے رہیں گے جس پر سیکورٹی و انتظامیہ کے اعلیٰ افسران تبادلہ خیال کریں گے۔ میٹنگ کے دوران لائن آف کنٹرول اور بین الاقوامی سرحد پر حالیہ مہینوں کے دوران دراندازی کے بڑھتے واقعات پر بھی غور و خوض کیا جائے گا۔ذرائع کے مطابق میٹنگ کے دوران حالیہ دنوں کے دوران جنوبی کشمیر کے لارو کولگام میں ہوئی عام شہریوں کی ہلاکتوں پر بھی معیاری عملیاتی طریق کار کے پس منظر میں تبادلہ خیال کیا جائے گا۔اس دوران معلوم ہوا ہے کہ گورنر کی صدارت میں منعقد ہونے والی میٹنگ کے دوران وادی کی تازہ ترین سیکورٹی صورتحال پر تفصیلی غور وخوض کیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ وادی میں جنگجویانہ سرگرمیوں کاموضوع بھی میٹنگ میں چھایا رہے گا جس دوران جنوبی اور شمالی کشمیر میں جنگجوانہ کارروائیوں کی روک تھام کے لیے نئی حکمت عملی پر بھی غور کیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ گورنر اس موقعے پر ریاست کے سبھی علاقوں کا خطہ وار جائزہ لیں گے اور اس کے مطابق ہی ماتحت افسران کو ہدایت کریں گے۔انہوں نے بتایا کہ میٹنگ کے دوران آنے والے پنچایتی انتکابات کو پرامن اور خوشگوار ماحول میں منعقد کرانے کے حوالے سے گورنر ستیہ پال ملک ریاست میں تعینات جملہ سیکورٹی ایجنسیوں کے اعلیٰ حکام کو خصوصی ہدایت دیں گے تاکہ ریاست میں ماہ رواں کی 17تاریخ سے شروع ہونے والے پنچایتی انتخابات بلاخلل اختتام پذیر ہوجائے۔ انہوں نے بتایا کہ پنچایتی انتخاب کا انعقاد بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کے کئی زیادہ کٹھن مرحلہ ہے اور امن دشمن عناصر اپنی موجودگی کو ظاہر کرنے کے لیے کبھی بھی کوئی منصوبہ ترتیب دے سکتے ہیں لہٰذا اس سلسلے میں امن دشن عناصر کے منصوبوں کا ناکام بنانے کی خاطر میٹنگ میں خصوصی لائحہ عمل ترتیب دیا جائے گا۔ ذرائع نے کے این ایس کو بتایا کہ جنگجوئوں کی طرف سے پہلے ہی پنچایتی انتخابات کو ناممکن بنانے کی خاطر لوگوں کو ووٹنگ عمل سے دور رہنے کی دھمکیاں دی جاچکی ہیں لہٰذا میٹنگ کے دوران انتخابات کو پرامن اور خوشگوار ماحول میں منعقد کرانے اور ووٹران کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے بھی ٹھوس لائحہ عمل مرتب کیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ گورنر کی صدارت میں ہونے والی میٹنگ کے دوران (رض)حالیہ مہینوں کے دوران سرینگر جموں شاہراہ پر جنگجوئوں کے حملوں پر خصوصی تبادلہ خیال کیا جائے گا اور آئندہ کے لیے سرینگر جموں شاہراہ، مغل روڑ اور سمتھن شاہراہ پر جنگجوئوں کی نقل و حرکت اور ا ن کے منصوبوں کو ناکام بنانے کے لئے ٹھوس اقدامات اٹھائے جائیں گے۔ اس کے علاوہ پاکستان سے ملنے والی لائن آف کنٹرول اور بین الاقوامی سرحد پر بھی گزشتہ مہینوں کے دوران دراندازی کے بڑھتے واقعات پر بات چیت کی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ میٹنگ کے دوران لائن آف کنٹرول اور بین الاقوامی سرحد پر جنگجوئوں کی نقل و حمل کو روکنے اور دراندازی کی کوششوں پر باند باندھنے کے لیے ٹھوس لائحہ عمل مرتب کیا جائے گا اور اس حوالے سے فوج اور دیگر فورسز کو خصوصی ہدایت دی جائیں گی۔اس دوران معلوم ہوا ہے کہ میٹنگ میں جی او سی شمالی کمانڈ، خصوصی مشیر برائے گورنر، پرنسپل سیکرٹری داخلہ، ڈیوژنل کمشنر کشمیر ، آئی جی پی برائے سرینگر و جموں کے علاوہ دیگر سیکورٹی ایجنسیوں کے اعلیٰ حکام شامل ہوں گے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں