انسانی حقوق کی پامالیوں پر اقوام متحدہ کے اعلیٰ افسر کا رد عمل حریت کانفرنس ع نے خوش آئند ہ عمل قراردیا

سرینگر/ حریت کانفرنس  نے اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کونسل کی سربراہ Michelle Bachelet کی جانب سے بھارت کو کشمیر میں حقوق انسانی کی پامالیوں کے معاملات پر متذکرہ کونسل کی جانب سے شائع شدہ رپورٹ پر نتیجہ خیز پیش رفت نہ کرنے پر برہمی کا اظہار کرنے کے عمل کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ جموںوکشمیر دنیا کا واحد خطہ ہے جہاں نہ صرف حد سے زیادہ فوجی جمائو ہے بلکہ حقوق انسانی کی پامالیاں عروج پر ہیں اور آئے روز یہاں کے عوام کو افواج اور فورسز کی جانب سے قتل و غارت گری ، تشدد، گرفتاریوں اور ہراسانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔بیان میں کہا گیا کہ چونکہ اقوام متحدہ کے ایجنڈے پر مسئلہ کشمیر سب سے زیادہ قدیم مسئلہ کے طور پر موجود ہے لہٰذا اس حوالے سے یہاں کے عوام کے تئیں اقوام متحدہ کو اپنی ذمہ داریاں نبھانے سے انکار نہیں کیا جاسکتا۔بیان میں کہا گیا کہ کشمیری عوام سے طاقت اور فوجی جمائو کے بل پر جینے کا حق چھین لیا گیا ہے اور حق و صداقت پر مبنی تحریک حق خودارادیت جس کو پوری دنیا کے ساتھ ساتھ اقوام متحدہ نے بھی تسلیم کیا ہے سے یہاں کے عوام کو محروم کرنے اور انہیں اپنے جائز جدوجہد سے باز رکھنے کیلئے طاقت کا بے تحاشہ استعمال کیا جارہا ہے ۔بیان میں کہاگیا کہ اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کونسل کی سربراہ کی جانب سے کشمیر میں حقوق انسانی کی پامالیوں کے حوالے سے بیان اس بات کا عکاس ہے کہ بھارت کشمیر میں خطرناک حد تک حقوق انسانی کی پامالیوں میں نہ صرف ملوث ہے بلکہ آئے روز یہاں کے عوام کو پر امن احتجاج کی صورت میں جس ظلم و جبر کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے وہ نہ صرف انتہائی تشوشناک بلکہ عالمی برادری کیلئے چشم کشا ہے ۔بیان میں کہا گیا کہ یہ اقوام متحدہ اور دیگر عالمی اداروں کی ذمہ داری ہے کہ وہ کشمیری عوام پر ہو رہے مظالم کے خاتمے اور یہاں پر ہو رہی انسانی حقوق کی شدید پامالیوںکو روکنے کیلئے اپنا کردار ادا کریں اور بھارت پر دبائو ڈالیں کہ وہ کشمیری عوا م کو انکا جینے کا حق دیگر انہیں بھی عزت و آبرو سے زندہ رہنے کا موقعہ فراہم کریں۔بیان میں گلورہ ہندوارہ میں ایک عسکری معرکے کے دوران شہید ہوئے عسکریت پسندوں شہید لیاقت احمد لون اور شہید فرقان کو انکی شہادت پر شاندار الفاظ میں خراج عقیدت ادا کیا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں