شوپیان اور ترال میں بڑے پیمانے پر جنگجو مخالف آپریشن کا آغاز دوران شب کھارپورسر نوپلوامہ میں تشدد بھڑک اُٹھا

سرینگر/ یو پی آئی /شوپیاں کے ٹینگ ونی گائوں میں تلاشی آپریشن ، سیکورٹی فورسز نے فرار ہونے کے راستے سیل کرکے جگہ جگہ پہرے بٹھا دئے ہیں جبکہ امیر آباد ترال علاقے کو بھی سیکورٹی فورسز نے محاصرے میں لے کر لوگوں کے چلنے پھرنے پر پابندی عائد کی۔ ادھر دورانِ شب جنگجو مخالف آپریشن کے دوران کھار محلہ سرنو پلوامہ اُبل پڑا، مشتعل نوجوانوں کو منتشر کرنے کیلئے اشک آور گیس کے گولے داغے گئے۔ عسکریت پسندوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے /جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
کے بعد 44آر آر اور ایس او جی شوپیاں نے ٹینگ ونی گائوں کو محاصرے میں لے کر لوگوں کے چلنے پھرنے پر پابندی عائد کی ۔ معلوم ہوا ہے کہ سیکورٹی فورسز نے گھر گھر تلاشی لی جس دوران مکینوں کے شناختی کارڈ باریک بینی سے چیک کئے گئے۔ مقامی ذرائع نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز نے آس پاس علاقوں کو بھی محاصرے میں لے کر لوگوں کو گھروں میں ہی رہنے کی تلقین کی ۔ دفاعی ذرائع کے مطابق شوپیاں کے ٹینگ ونی گائوں میں عسکریت پسندوں کی نقل وحرکت کی اطلاع ملنے کے بعد تلاشی آپریشن شروع کیا گیا جس دوران مکینوں کے شناختی کارڈ چیک کئے گئے۔ ادھر سہ پہر چار بجے کے بعد 42آر آر ، سی آر پی ایف اور ٹاسک فورس نے امیر آباد ترال علاقے کو محاصرے میں لے کر لوگوں کے چلنے پھرنے پر پابندی عائد کی ۔ دفاعی ذرائع کے مطابق عسکریت پسندوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد امیر آباد ترال اور اُس کے ملحقہ علاقوں کو پوری طرح سے سیل کرکے بڑے پیمانے پر تلاشی آپریشن شروع کیا گیا ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ سیکورٹی فورسز نے لوگوں سے تلقین کی کہ وہ کسی بھی صورت میں گھروں سے باہر آنے کی کوشش نہ کریں۔ ادھر کل شام کھار پور سرنو پلوامہ گائوں میں اُس وقت تشدد بھڑک اُٹھا جب سیکورٹی فورسز نے گائوں کو محاصرے میں لے کر جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا۔ نمائندے کے مطابق جونہی سیکورٹی فورسز کے اہلکار سرنو پلوامہ گائوں میں نمودار ہوئے نوجوان سڑکوں پر نکل آئے اور احتجاجی مظاہرئے شروع کئے۔ معلوم ہوا ہے کہ تشدد پر اُتر آئی بھیڑ کو منتشر کرنے کیلئے سیکورٹی فورسز نے ٹیر گیس شلنگ کے ساتھ ساتھ ساونڈ شیلوں کا استعمال کیا جس کے نتیجے میں کھار پور سرنو پلوامہ گائون میں سنسنی اور خوف ودہشت کاماحول پھیل گیا اور لوگ محفوظ مقامات کی طرف بھاگنے لگے۔ ذرائع کے مطابق سیکورٹی فورسز اور مظاہرین کے درمیان دیر رات تک تصادم آرائیوں کا سلسلہ جار ی رہا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں