مودی حکومت کی پالیسیوں کے خلاف متحدہوکر لڑنے کی ضرورت: اپوزیشن

نئی دہلی﴿یو این آئی﴾ پٹرول اور ڈیزل کی آسمان چھوتی قیمتوں کی مخالفت میں بھارت بند میں شامل اپوزیشن پارٹیوں نے مودی حکومت کی پالیسیوں کو عوام مخالف بتاتے ہوئے اسے بے حس قرار دیا ہے اور کہا کہ موجودہ حکومت کو اقتدار سے باہر کرنے کے لئے ملکر کام کرنے کی ضرورت ہے ۔کانگریس کی قیادت میں پیر کو یہاں رام لیلا میدان میں منعقد احتجاجی مظاہرہ میں نیشنلسٹ کانگریس پارٹی، راشٹریہ جنتا دل، راشٹریہ لوک دل اور لوک تانترک جنتا دل سمیت 16پارٹیوں نے شرکت کی اور پٹرولیم مصنوعات کی لگاتار پڑھ رہی قیمتوں کے ضمن میں حکومت کی سخت تنقید کی ۔ سبھی پارٹیوں نے مودی حکومت کو بے حس قرار دیا اور کہا کہ چار سال میں ان کی پالیسیوں کی وجہ سے ملک کی عوام بے حال ہیں ۔اس پہلے ان سبھی پارٹیوں نے راج گھاٹ جا کر بابائے قوم مہاتما گاندھی کی سمادھی پر پھول چڑھائے ۔ اس دوران کانگریس صدر راہل گاندھی نے مانسرور کا پاک پانی سمادھی پر چڑھایا ،راہل گاندھی 31اگست سے کیلاس مانسرور کی سفر پر تھے ۔کانگریس نے کہا کہ ملک کے عوام جس مہنگائی کی جس تکلیف سے گذر رہے ہیں اس سے بند میں شامل سبھی پارٹیوں کے رہنما سمجھتے ہیں لیکن تکلیف کی بات یہ ہے کہ ان عوام کے ان مسائل کو وزیر اعظم نریندر مودی اور بی جے پی کے لیڈر نہیں سمجھتے ۔ عوام کے مفاد سے جڑے جو سوالات اٹھائے جاتے ہیں وزیر اعظم ان کا جواب نہیں دیتے ،وہ صرف اپنے کچھ پسندیدہ صنعت کاروں کی بات سنتے ہیں اور ملک کی عووام کے مسائل پر کان نہیں دھرتے ۔راہل گاندھی نے کہا کہ مودی صرف لچھے دار گفتگو کرتے ہیں ، سوچھ بھارت کی بات کرتے ہیں اور اس کے نام پر پورے ملک میں بیت الخلائ بنواتے ہیں لیکن لوگوں کو پانی ہی دستیاب نہیں ہے تو ویہ اس کا استعمال کیسے کریں ۔راہل نے مزید کہا کہ وہ پتہ نہیں کون سی دنیا میں ہیں، صرف بیان بازی کرتے رہتے ہیں۔۔۔ ملک ان کو دیکھ کر تنگ آگیا ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں