پٹرول ڈیزل کی بڑھتی ہوئی قیمتوں پر بی جے پی کی خاموشی

نئی دہلی ،9ستمبر﴿یواین آئی﴾بھارتیہ جنتاپارٹی ﴿بی جے پی ﴾نے ملک میں پٹرول اور ڈیزل کی بڑھتی قیمتوں کے تعلق سے ہونے والے سوال پر آج خاموشی اختیار کرلی جبکہ درج فہرست ذاتوں اور قبائل پر مظالم کی روک تھام سے متعلق قانون کے سلسلہ میں اپنے موقف پر قائم رہنے کی بات کہی ۔بی جے پی کی قومی مجلس عاملہ کی یہاں جاری میٹنگ کی میڈیا کو تفصیلات بتانے کیلئے آئے فروغ انسانی وسائل کے وزیرپرکاش جاؤڈیکر سے پٹرول اور ڈیزل کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے بارے میں سوال پوچھے جانے پر انھوں نے کہاکہ ترقی پسند اتحاد حکومت کے دوران مہنگائی کی شرح 10فیصدتھی جبکہ مودی حکومت کے دورمیں یہ شرح پانچ فیصدسے نیچے ہے ۔حکومت اس بارے میں صحیح سمت میں قدم اٹھائے گی۔یہ پوچھے جانے پرکہ 2022تک نئے ہندستان کی تعمیر ہونے پر ڈیزل اور پٹرول کی کیاقیمت ہوگی ،مسٹر جاؤڈیکر نے کہاکہ حکومت سب کو ساتھ لیکر ترقیاتی کام کرتی ہے ۔ ملک میں لوگوں کی قوت خرید بڑھ رہی ہے ۔پٹرولیم مصنوعات کو جی ایس ٹی کے دائرے میں لائے جانے کے بارے میں پوچھنے پر انھوں نے کہاکہ اس سلسلہ میں سبھی پارٹی کی سرکاروں کے ساتھ ملکر متفقہ طورپر کوئی فیصلہ کیاجاتاہے ۔اس بارے میں بار بار سوال پوچھے جانے پر انھوں نے کہا،آپ لوگوں کو سیاسی قرارداد کی کاپی مل جائیگی۔یہ پوچھے جانے پر کہ ملک میں درج فہرست ذات اورقبائل پر ہونے والے مظالم کی روک تھام کے قانون سے متعلق اعلی ذاتوں کے لوگوں کے احتجاج کے بارے میں مجلس عاملہ میں کیا بات چیت ہوئی ،مسٹر جاؤڈیکر نے کہا،ہم نے پورے سماج کو ایک ساتھ لیکر سب کی ترقی کی پالیسی بنائی ہے ۔ہم جو فیصلہ کرتے ہیں ،پورے غوروخوض کے بعد ہی کرتے ہیں ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں