شوپیان میں چوتھے روز بھی ہڑتال لوگوں نے سڑکوں پر آکر احتجاج کیا

سرینگر/کے این ایس /شوپیاں میں مسلسل چوتھے روز بھی شہری ہلاکتوں کے خلاف مکمل ہڑتال سے معمولات زندگی ٹھپ ہو کر رہ گئیں۔ اس دوران ضلع میں کسی بھی ناخوشگوار واقعے کو ٹالنے کیلئے پولیس وفورسز کی بھاری جمعیت کو تعینات کیا گیا تھا۔ معلوم ہوا ہے کہ شوپیاں میں مسلسل چوتھے روز بھی موبائیل انٹرنیٹ سروس منقطع رہی ۔ شہری ہلاکتوں کے خلاف پہاڑی ضلع شوپیاں میں مسلسل چوتھے روز بھی مکمل ہڑتال سے زندگی ٹھپ ہو کر رہ گئی۔ نمائندے کے مطابق چار عام شہریوں اور دو جنگجوئوں کی اجتماعی فاتحہ خوانی کے سلسلے میں آبائی گائوں میں تقاریب منعقد ہوئیں جس دوران لوگوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی ۔ اس موقعے پر ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کے ساتھ بات کرتے ہوئے لوگوں نے بتایا کہ حکومت کو شہری ہلاکتوں میں ملوث افراد کو کیفرکردار تک پہنچانے/جاری صفحہ نمبر۱۱پر
 کیلئے ایف آئی آر درج کرنا چاہئے۔ مقامی لوگوں نے بتایا کہ حد تو یہ ہے کہ ابھی تک حکومت نے اس سلسلے میں ایف آئی آر درج کرنے کی بھی زحمت گوارا نہیں کی۔ نمائندے کے مطابق ضلع بھر میں انتظامیہ نے پولیس وفورسز کو تعینات کیا تھا ۔ معلوم ہوا ہے کہ شوپیاں کے کئی علاقوں میں معمولی خشت باری کے واقعات رونما ہوئے تاہم مجموعی طورپر حالات قابو میں رہے۔ادھر پلوامہ کے راجپورہ اور دوسرے علاقوں میں شوپیاں ہلاکتوں کے خلاف چوتھے روز ہڑتال رہی ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں