کٹھوعہ میں ’ ’ہندو ایکتا منچ‘ ‘کی ریلی، پولیس کی شیلنگ اور لاٹھی چارج

سرینگر//﴿آفتاب ویب ڈیسک ﴾ ضلع کٹھوعہ کے رسانہ نامی گاؤں میں جنوری کے اوائل میں پیش آئے آٹھ سالہ کمسن بچی آصفہ بانو کے قتل اور عصمت دری واقعہ کی تحقیقات سینٹرل بیورو آف انویسٹی گیشن ﴿سی بی آئی﴾کے حوالے کرنے کے ایک مخصوص طبقہ کے مطالبے کو منوانے کے لئے معرض وجود میں آنے والی ہندو ایکتا منچ نے جمعرات کو ایک بار پھر ضلع میں نافذ امتناعی احکامات کی خلاف ورزی کرتے ہوئے ہیرا نگر سب ڈویژن میں ایک پرتشدد احتجاجی مارچ نکالا۔ ہیرا نگر کے چڈوال سے دیال چک تک نکلنے والے اس مارچ جس کو ہندو ایکتا منچ نے ’امن مارچ‘ کا نام دیا تھا، کے شرکائ نے پولیس کے ساتھ دھکا مکی کی جس کے بعد پولیس نے مجبوراً آنسو گیس کے کچھ شیل چھوڑنے کے علاوہ احتجاجیوں کے خلاف لاٹھی چارج بھی کیا۔ اس کے علاوہ قریب درجن بھر احتجاجیوں اور ان کے قائدین کو حفاظتی تحویل میں لیا گیا۔ طرفین کے مابین جھڑپوں کے دوران احتجاجیوں کی جانب سے پولیس پر پتھراؤ بھی کیا گیا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں