مسئلہ کشمیر کے حل تک جدوجہد جاری رہیگی:اعظم انقلابی,

,

سرینگر/ قومی محاذِ آزادی کے سینئر رُکن اعظم انقلابی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ بھارتی مستعمرین، مستکبرین اور جباّرین کی بے لگام فوج نے پھر ایک بار 4مارچ 2018ئ÷ کو شوپیان کے مقام پر بربریت کا مظاہرہ کرتے ہوئے کئی معصوم شہریوں کو درجۂ شہادت تک پہنچاکر اِس بات کا ثبوت فراہم کیا کہ کالا قانون AFSPAواقعی ایک برہنہ خون آلود تلوار ہے جس کی پیاس بجھُتی نہیں۔ فوجیوں کی یہ تلوار ہی یہاں حاکمِ ہے۔ اِس ظالم تلوار کو کشمیریوں کے خونِ ناحق کی لت پڑی ہے۔ ،بھارتی حکمران یاد رکھیں کہ کشمیریوں کی مزاحمتی تحریک فی نفسہِ ایک ادارہ ہے، انجمن ہے اور حکومت بھی۔ اِس مزاحمتی حکومت کے قائدین عملاً کشمیریوں کے دلوں پر حکومت کرتے ہیں۔ مُزاحمتی حکومت کے قائدین کی کال پر کشمیر کے غےّور اور جسُور باسیوں نے لبیک کہتے ہوئے ریفرنڈم ہڑتال کے ذریعے بھارتی رعُونت پسند مستعمرین کو واضح پیغام دیا ہیکہ جب تک بھارتی فوج کشمیر سے رخصت نہیں ہوتی اور کشمیریوں کو حقِ خود ارادےّت کے تحت اپنے سیاسی مستقبل کا خود تعےّن کرنے کا موقع نہیں دیا جاتا کشمیر کی پرُامن جمہوری مزاحمتی تحریک پوری شدّت اور عزم و ارادہ کے ساتھ جاری رہے گی۔

,
مزید دیکهے

متعلقہ خبریں