ٹھیکیداروں کا احتجاجی ہڑتا ل اور دفاتر کی تالہ بندی دسویں روز میںداخل  تاجر انجمنوں اور سول سوسائٹی نے یکجہتی کااظہار کیا,

,

سرینگر/طارق احمد بابا جنرل سیکریٹری کے بیان کے مطابق جموں وکشمیر کنٹریکٹرس کارڈی نیشن کمیٹی کی ہڑتال کل دسویں روز میں داخل ہوگئی،ا گرچہ کل ریاست کی وزیرا علیٰ محبوبہ مفتی نے ٹھیکیداروں کو تین دن کے اندر مطالبات پورے کرنے کی یقین دہانی کرائی تھی لیکن اس کے باوجود ٹھیکیداروں نے اپنی احتجاجی ہڑتال اور تالہ بندی جاری رکھا ،ا سکے ساتھ ساتھ ٹھیکیداروں نے احتجاج میں شدت اختیار کرکے کل تمام کاموں کو بند کیا، آج کے احتجاجی دھرنے میںکشمیر کے تاجر انجمنوں نے بھی شرکت کی، کے ٹی ایم ایف کے صدر بشیر احمد راتھر نے دھرنے پر بیٹھے تھیکیداروں کو یقین دلایا کہ پریشانی کی اس گھڑی میں کے ٹی ایم ایف ٹھیکیداروں کے شانہ بشانہ کھڑی رہے گی، اس احتجاجی دھرنے پر بیٹھے ٹھیکیداروں کے ساتھ اظہار یکجہتی کرچکے کشمیر کے ۴۲ انجمنوں کے نمائندوں اور کشمیر کارڈی نیشن کمیٹی کے کنوینر سراج صاحب اور شکیل احمد قلندر نے اپنی تقریر میں ٹھیکیداروں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرنے کے علاوہ اپنی طرف سے بھر پور تعاون پیش کرنے کا یقین دلایا،کے سی آئی کے صدر مختار یوسف نے بھی ٹھیکیداروں کے تئیں اپنی یکجہتی کااظہار کیا اور ایف سی آئی کی طرف سے تعاون پیش کیا، اس احتجاجی دھرنے پر آج وادی کے مختلف اضلاع سے آئے ہوئے نمائندوں نے شرکت کی،اوڑی کوکرناگ سے آئے ہوئے ٹھیکیدار نمائندوں نے بھی شرکت کی اور کاردی نیشن کمیتی کے ہر پروگرام کو عملی جامہ پہنانے کا ارادہ ظاہر کیا، قاضی گنڈ سے آئے ہوئے ٹھیکیداروں نے نذیر احمد کی قیادت میں اس احتجاجی دھرنے میں شرکت کی اور اپنی تقریر سے ٹھیکیداروں کی حوصلہ افزائی کی، آخر پر چیرمین غلام جیلانی پرزہ نے ٹھیکیداروں پر زور دیا کہ وہ اتحا د واتفاق کابھر پور مظاہرہ کریں اور ساتھ ہی کارڈی نیشن کمیٹی کے پروگراموں پر من و عن عمل کریں ،انہوں نے کہا احتجاجی ہڑتال تب تک جاری رہے گی جب تک ٹھیکیداروں کے مطالبات پورے نہیںہونگے۔

,
مزید دیکهے

متعلقہ خبریں