نہتے شہریوں کی ہلاکتوں سے حالات ابتر ہوتے جارہے ہیں:میرواعظ- فورسز کی کارروائیوں کو انسانیت کُش اور ظالمانہ قرار دیا

سرینگر/ حریت کانفرنس ’ع‘کے چیئرمین میرواعظ ڈاکٹر مولوی محمد عمر فاروق جو گذشتہ دو دنوں سے شوپیاں میں ہوئی ہلاکتوںکے پیش نظرایک بار پھر اپنی رہائش گاہ پر نظر بند کئے گئے ہیں نے کشمیر کی موجودہ صورتحال کو انتہائی کشیدہ قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ سرکاری فورسز کے ہاتھوں صرف پچھلے6 ہفتوں کے دوران 13 سے زائدنہتے شہریوں کو بے دردی کے ساتھ قتل کئے جانے کے نتیجے میںدن بہ دن حالات مزید ابتر ہوتے جارہے ہیںاور عوامی غم و غصہ میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ میرواعظ نے شوپیاں میںہوئی ہلاکتوں اور دیگر تمام ہلاکتوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے انہیں انسانیت کش اور ظالمانہ قرار دیا ہے ۔ انہوں نے مہلوکین کے لواحقین کے ساتھ ہمدردی اور یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے انہیں یقین دلایا ہے کہ دکھ اور تکلیف کی اس گھڑی میں پوری کشمیری قوم ان کے ساتھ کھڑی ہے۔انہوں نے کہاکہ کالے قانون افسپا کی آڑ میںیہاںفوج اور فورسز کو حاصل بے لگام اختیارات کی بنائ پرکسی بھی قانونی احتساب سے مبرا فورسزاہلکارمن مرضی کے مطابق جب چاہے کسی کو بھی قتل کردیتے ہیں۔ میرواعظ نے کہا کہ شہید کئے گئے افراد میں اکثریت ضلع شوپیاں سے تعلق رکھتے ہیں جن میں سائمہ وانی نامی ایک 17 سالہ بچی سمیت 8/جاری صفحہ ۱۱ پر

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں