حکمران اور ان کی انتظامیہ کشمیریوں کو دشمن تصور کرتے ہیں:یٰسین ملک- جیلوں میں نظر بندوں کو ٹارچر کرنے کی مذمت کی

سرینگر/سفاک قتل عام کے بعد OGWاور کراس فائرنگ کے مفروضے گھڑکران جرائم کو قانونی تحفظ فراہم کرنے کا عمل انتہائی شرم ناک ہے۔ ہر بھارتی ادارہ خواہ وہ عدلیہ ہو، سیکورٹی سے وابستہ ہو یا کہ سول ایڈمنسٹریشن کشمیریوں کو دشمن تصور کرتا ہے کہ جن کے کوئی انسانی حقوق نہیں ۔ان باتوں کا اظہار لبریشن فرنٹ کے محبوس چیئرمین محمد یاسین ملک نے شوپیان قتل عام اور اس کے بعد فوج اور وزیراعلیٰ کے بیانات جن میں اس قتل عام میں شہید کئے معصومین کو OGWاور کراس فائرنگ کا شکار قرار دیا گیا ہے کی مذمت کرتے ہوئے کیا ہے۔ فوج کے بیان جس میں شوپیان میں تہہ تیغ کئے گئے معصومین کو OGW'sقرار دے کر اس قتل عام کا جواز پیدا کرنے کی کوشش کی گئی ہے کو لغو اور استعماری قرار دیتے ہوئے محبوس فرنٹ چیرمین جو دو مذید فرنٹ قائدین بشیر کشمیری اور غلام محمد ڈار کے ہمراہ سرینگر سینٹرل جیل میں مقید ہیں نے کہا ہے کہ بھارتی قابض افواج اور فورسز کا دیرینہ وطیرہ رہا ہے کہ وہ جموں کشمیر میں معصومین کے قتل عام اور دوسرے جرائم پر پردہ ڈالنے کیلئے ایسے ہی بے ہودہ اور لایعنی مفروضے تراشتے ہیں تاکہ اپنے گناہوں اور جرائم کو قانونہ جواز بخش سکیں۔انہوں نے /جاری صفحہ ۱۱ پر

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں