آئی این ایکس میڈیا معاملہ میں کارتی کو راحت نہیں ملی

نئی دہلی/ 6مارچ ﴿ یواین آئی﴾ سپریم کورٹ سے آئی این ایکس میڈیا معاملے میں سابق مرکزی وزیر خزانہ پی چدمبرم کے بیٹے کارتی چدمبرم کو آج راحت نہیں ملی۔ اب اس معاملے کی اگلی سماعت آٹھ مارچ کو ہوگی۔ چیف جسٹس دیپک مشرا، جسٹس اے ایم کھانولکر اور ڈی وائی چندرچوڑ کی تین رکنی بنچ نے اس معاملے کی اگلی سماعت آٹھ مارچ طے کی ہے ۔ کارتی کی جانب سے سینئر وکیل کپل سبل اس معاملہ میں عبوری راحت کیلئے آج عدالت میں حاضر ہوئے ۔ مسٹر سبل نے کہاہم جانچ ایجنسی کے ساتھ معاملہ میں ہر طرح سے تعاون کو تیار ہیں اور ہم نے پہلے بھی ایسا ہی کیا ہے ۔ سپریم کورٹ نے کارتی کیخلاف منی لانڈرنگ ایکٹ ﴿ پی ایم ایل اے ﴾ کے تحت رجسٹرڈ معاملے کو لے کر انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ ﴿ای ڈی﴾ کو بھی نوٹس جاری کیا۔ کارتی نے اپنی درخواست میں کہا ہے کہ ای ڈی اپنے دائرہ اختیار سے باہر جاکر ان کے خلاف تحقیقات کر رہا ہے ۔ غور طلب ہے کہ کارتی فی الحال چھ مارچ تک سی بی آئی کی حراست میں ہیں۔ انہیں 28فروری کو لندن سے چنئی ہوائی اڈے پر اترتے وقت سی بی آئی نے گرفتار کیا اور بعد میں انہیں دہلی لایا گیا تھا۔ کارتی چدمبرم پرآئی این ایکس میڈیا میں تقریبا 350کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کو ڈائرکٹ فارن انویسٹمنٹ پروموشن بورڈ ﴿ایف آئی پی بی ﴾ سے منظوری دلانے کے لئے کمیشن لینے کے الزامات ہیں۔ اس وقت ان کے والد پی چدمبرم مرکزی وزیر خزانہ تھے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں