بشار الاسد کا غوطہ میں فوجی مہم جاری رکھنے کا اعلان

بیروت/5مارچ ﴿رائٹر﴾ شام کے صدر بشار الاسد نے کہا کہ دمشق کے قریب مشرقی غوطہ علاقے میں فوجی مہم جاری رہے گی اور ساتھ ہی مقامی شہریوں کو باغیوں کے قبضے والے علاقہ کوچھوڑنے کی اجازت بھی دی جائے گی۔ مسٹر اسد نے کل صحافیوں کیلئے جاری بیان میں کہاجنگ بندی اور لڑاکا مہمات کے درمیان کوئی تضاد نہیں ہے ۔ شا می عرب فوج کے ذریعہ غوطہ میں کل اور پرسوں حاصل کی گئی پیش رفت جنگ بندی کا ہی حصہ تھے۔انہوں نے کہااس لئے ہم نے مقامی شہریوں کو جانے کا راستہ کھولنے کے ساتھ ہی ہمیں متوازی طور پر فوجی آپریشن کو بھی جاری رکھنا چاہئے۔اسد روس کی جانب سے ہر روز مقامی وقت کے مطابق صبح نو بجے سے دوپہر بعد دو بجے تک انسانی جنگ بندی کا اعلان کئے جانے پر رد عمل کا اظہار کر رہے تھے ۔ اگرچہ امریکہ نے اسے مذاقبتاتے ہوئے مسترد کر دیا ہے۔ دریں اثنائ امریکہ نے روس پر شام کے مشرقی غوطہ علاقے میں شہریوں کے قتل کرنے کا سنگین الزام لگاتے ہوئے کہا روس کے فوجی طیاروں نے 24سے 28فروری کے درمیان روزانہ دمشق اور مشرقی غوطہ میں کم از کم 20بار بموں کی بارش کی۔وائٹ ہاؤس کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ روس نے امریکی جنگ بندی کی شرائط کو پوری طرح نظر انداز کیا اور دہشت گردی مخالف مہمات کی آڑ میں معصوم شہریوں کو مارا۔روسي طیاروں نے پرواز کرنے کے لئے شمال مغربی شام میں ھمائی میم فوجی ہوائی اڈے کابھی استعمال کیا۔ادھر اقوام متحدہ نے کہا ہے کہ جنگ زدہ شام کے دارالحکومت دمشق کے نواح میں مشرقی غوطہ کی موجودہ صورت حال قطعی ناقابل قبول ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں