میجر آدتیہ کمار کانام ایف آئی آر میں شامل نہیں سپریم کورٹ نے 24 / اپریل تک شنوائی موخر کی

سرینگر/اے پی آئی /گنہ پورہ شوپیاں میں عام شہریوں کی ہلاکتوں کے سلسلے میں میجر کا نام ایف آئی آر میں درج نہ کرنے کا عندیہ دیتے ہوئے ریاستی حکومت نے عدالت عظمیٰ کو واقع کے بارے میں تمام جانکاری فراہم کی تاہم عدالت عظمیٰ نے 24اپریل تک شنوائی کو موخر کر دیا ۔ گنہ پورہ شوپیاں میں عام شہریوں کی ہلاکت کے بعد 10گڑھوال ریجمنٹ کے میجر آدتیہ کمار کا نام ایف آئی آر میں درج نہ کرنے کا حکومت نے اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ عام شہریوں کی ہلاکتوں کے سلسلے میں 10گڑھوال ریجمنٹ کے خلاف پولیس نے ایف آئی آر درج کیاہے ۔ سپریم کورٹ /جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
 آف انڈیا میں 10گڈھوال ریجمنٹ میں تعینات میجر کے والد نے عرضی دائر کی تھی کہ ان کے بیٹے کے خلاف درج کئے گئے ایف آئی آر کے بعد تحقیقات کا کام روک دیا جائے ،شنوائی کے بعد سپریم کورٹ آف انڈیا نے ان کی عرضی منظور کی تھی اور حکومت کو 15دنوں کے اندر اندر گنہ پورہ شوپیاں کے معاملے کے بارے میں تمام تفصیلات اور میجر آدتیہ کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کے بارے میں تفصیلات پیش کرنے کی ہدایت کی تھی ۔ 5مارچ کو شنوائی کے دوران ریاستی حکومت نے کہا کہ میجر آدتیہ کمار کا نام ایف آئی آر میں شامل نہیں ہے تاہم سپریم کورٹ آف انڈیا کے تین رکنی بینچ نے 24اپریل تک ریاستی حکومت کو تحقیقات روک دینے کے احکامات صادر کئے ۔ عدالت عظمیٰ کے مطابق واقع کے بارے میں تمام تفصیلات اور شواہد جمع کئے جا رہے ہیں ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں