تقسیم ہند کیلئے کانگریس ذمہ دار، ڈاکٹر فاروق حقائق کو جھٹلانہیں سکتے: نرمل سنگھ - مرکزی وزیر نے نیشنل کانفرنس کے سربراہ کو تاریخ کا مطالعہ کرنے کا مشورہ دیا

سرینگر/یو پی آئی /ملک کی تقسیم کیلئے کانگریس کو ذمہ دار ٹھراتے ہوئے ریاست کے نائب وزیر اعلیٰ نے کہاکہ نیشنل کانفرنس کے سرپرست اعلیٰ کو اپنے گریبان میں جھانک کر دیکھنا چاہئے۔ ادھربی جے پی کے جنرل سیکریٹری نے کہا کہ تقسیم ہند کیلئے انگریز ذمہ دار تھے، جموں میں نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے ریاست کے نائب وزیر اعلیٰ ڈاکٹر نرمل سنگھ نے کہاکہ تقسیم ہند کے متعلق نیشنل کانفرنس کے سرپرست اعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبدا ﷲکا بیان گمراہ کن ہے۔ انہوںنے کہاکہ مسلم لیگ کا قیام کس نے عمل میں لایا یہ کسی سے ڈھکی چھپی بات نہیں۔ انہوںنے کہاکہ حقیقت یہی ہے کہ کانگریس تقسیم/جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
 ہند کیلئے ذمہ دار ہے اور اُس کے لیڈر وں کی ایمائ پر ہی ہندوستان تقسیم ہوا۔ دریں اثنا براکہ پورہ اننت ناگ میں ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے بی جے پی کے جنرل سیکریٹری اشوک کول نے کہاکہ تقسیم ہند کیلئے انگریز ہی ذمہ دار تھے۔ انہوںنے کہاکہ ملک کو آزاد کرانے کیلئے مسلمان او رہندئوں نے مل جل کر کام کیا تاہم انگریزوں نے ہندو مسلم اتحاد کو توڑنے کیلئے بھارت کو تقسیم کرنے کا منصوبہ بنایا ۔ ادھروزیر اعظم ہند کے دفتر میں تعینات وزیر مملکت نے نیشنل کانفرنس کے سرپرست اعلیٰ کو تاریخ کا مطالع کرنے کا مشورہ دیتے ہوئے کہاکہ جناح ہی تقسیم ہند کے ذمہ دار تھے۔ انہوںنے کہاکہ گاندھی تقسیم ہند کے مخالف تھے تاہم جناح کے اصرار پر ہی پاکستان بنا ۔ مرکزی وزیر مملکت نے بتایا کہ نیشنل کانفرنس کا سرپرست اعلیٰ سرخیوں میں رہنا چاہتا اس لئے وہ ایسے بیانات دے رہا ہے۔ نیشنل کانفرنس کے سرپرست اعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبدا ﷲ کے اُس بیان جس میں انہوںنے جواہر لال نہرو ، سردار پٹیل اور مولانا عبدالکلام آزاد تقسیم ہند کا ذمہ دار قرار دیا کو مسترد کرتے ہوئے وزیر اعظم ہند کے دفتر میں تعینات وزیر مملکت نے کہاکہ فاروق عبدا ﷲ تاریخ کو جھٹلا رہا ہے۔ انہوںنے کہاکہ جناح ہی مسلمانوں کیلئے الگ ملک دیکھنا چاہتے تھے اگر چہ آنجہانی مہاتما گاندھی نے جناح سے اصرارکیا کہ پوری قیادت جناح کو ہی بھارت کا وزیر اعظم تسلیم کرئے گی تاہم جناح پاکستان بنانے پر بضد رہے ۔ انہوںنے کہاکہ مہاتما گاندھی نے پوری کانگریس قیادت کو مائل کیا تھا کہ وہ جناح کو وزیرا عظم تسلیم کرئے اگر چہ قیادت نے بھی لیڈر کی بات کو مانا تاہم جناح نے مہاتما گاندھی کی جانب سے پیش کی جانے والی تجویز کو مسترد کرتے ہوئے تقسیم ہند کرنے پر اٹل رہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں