پوری وادی میں تعمیراتی کام ٹھپ، سرکاری پروجیکٹوں پر کام بند لالچوک میں گھنٹہ گھر کے سامنے کارڈی نیشن کمیٹی کا دھرنا

سرینگر/کے این ایس/ 750کروڑ واجب الادا رقومات کی ادائیگی میں تاخیر کے خلاف ٹھیکیداروں کی ایک انجمن سینٹرل کانٹریکٹرس کارڈی نیشن کمیٹی کے جھنڈے تلے ٹھکیداروں نے تاریخی گھنٹہ گھر تک مارچ کرتے ہوئے دھرنا دیا۔ رقومات کی ادائیگی میں تاخیر کے خلاف27 فروری سے غیر معینہ ہڑتال کی وجہ سے جہاں تمام سرکاری پروجیکٹوں پر کام بند کیا گیا ہے،وہیں اتوار کو سینٹرل کانٹریکٹرس کارڈی نیشن کمیٹی کی طرف سے لالچوک میں تعمیراتی معماروں/جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
 نے پرامن طور دھرنا دیا اور رقومات کی ادائیگی کے حق میں نعرے بلند کیں۔ تعمیراتی ٹھکیدار بعد از دوپہر گھنٹہ گھر نزدیک پارک میں جمع ہوئے،اور بینئر و پلے کارڑ اٹھا ر مخلوط سرکار اور وزیر خزانہ کے خلاف نعرے بلند کیں۔مظاہرین نے بینئروں پر واجب الادا رقومات کی ادائیگی اور جی ایس ٹی کو ختم کرنے کے نعرے درج کئے تھے۔اس موقعہ پر انہوں نے جلوس کی صورت میں گھنٹہ گھر تک مارچ کیا،اور کچھ وقت تک وہاں پر دھرنا دیکر پرامن طور پر منتشر ہوئے۔اس موقعہ پر ریلی میں تمام اضلاع کے ٹھکیدار نمائندوں نے بھی شرکت کی،اور سینٹرل کانٹریکٹر کارڈی نیشن کمیٹی کو بھر پور حمائت دینے کا اعلان کیا۔نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کارڈی نیشن کمیٹی کے جنرل سیکریٹری فاروق احمد ڈار نے ایک بار پھر دہرایا کہ تب تک ہڑتال جاری رہے گی،جب تک واجب الادا رقومات کو واگزار نہیں کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ آئندہ دنوں میں ہڑتال کی شدت اور احتجاجی مظاہروں میں وسعت لائی جائے گی۔اگر چہ انتظامیہ نے ان سے رابطہ قائم کرکے ایک ماہ تک آن لائن بلنگ یا ادائیگی نظام کو موخر کرنے کی بات کہی تھی،تاہم انہوں نے اس پیشکش کو مسترد کیا۔انہوں نے کہا کہ سینٹرل کانٹریکٹرس کارڈی نیشن کمیٹی نے انتظامی افسران سے واضح کیا گیا کہ جب تک رقومات کی ادائیگی مکمل نہیں کی جاتی،تب تک وہ اپنی ہڑتال جاری رکھے گے۔ڈار نے کہا کہ آئندہ مرحلہ میں سیول سوسائٹی اور دیگر تجارتی انجمنوں کے ساتھ رابطہ قائم کر کے اس ہڑتال کو مزید موثر بنایا جائے گا۔ ڈار نے کہا کہ15مارچ کو اگر رقومات کو واگزار نہیں کیا گیا تو اس ترقیاتی کاموں کو منہدم کیا جائے گا،جو انہوں نے تعمیر کیا،اور اب تک اس کی ادائیگی نہیں کی گئی۔کارڈی نیشن کمیٹی کے جنرل سیکریٹری نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ2013میں اس طرح کے ہڑتال کے دوران اس وقت اپوزیشن میں بیٹھی پی ڈی پی نے نہ صرف ٹھکیداروں کی مانگوں کو جائز قرار دیا تھا،بلکہ حمائت بھی دی تھی۔ڈار نے کہا کہ ضلی سطحوں پر بھی احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شروع کیا گیا ہے،اور آئندہ دنوں میں اس میں مزید شدت لائی جائے گی،جس کے تناظر میں پیر کو ضلع اسلام آباد میں ایک احتجاجی جلسہ منعقد کیا جائے گا۔احتجاجی مظاہرے میں کارڈی نیشن کمیٹی کے نائب صدر حاجی محمد صدیق صوفی، شیخ باغ کارڈی نیشن کمیٹی کے تصدق حسین لاوئے، چیف آرگنائزرحاجی نذیر احمد زرگر،بارہمولہ کے صدر امتیاز احمد بٹ،کپوارہ کے صدر ضلع،ریاض احمد،غلام رسول میر، چرار شریف،ہلال احمد ترہبلی عبدالخالق،گاندربل،جاوید احمدزرگر،اشفاق احمد خان،ارشد احمد بٹ،قوام الدین شلوتی محمد مقبول ملہ،عبدارحیم وانی،محمد رفیق وانی،عمر جاوید اور سیلف ہلپ گروپ بارہمولہ کے ترجمان سمیت دیگر لوگ بھی موجود تھے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں