کشمیری عوام انتہائی مشکلات سے دوچار :محبوبہ مفتی

وزیر اعلیٰ نے وزیراعظم نریندر مودی کے ساتھ ملاقات کے دوران انہیں کشمیری عوام کے مسائل سے آگاہ کیا اور ان کو حل کرنے کی ضرورت پر زور دیا - ایجنڈا آف الائنس کی عمل آوری، پی ایم ڈی پی اور پارٹیوں کے مابین بہترتال میل سے جڑے امور پر بھی تبادلہ خیال ہوا
نئی دہلی /وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی جو کہ نئی دہلی میں ہیں نے کل شام وزیر اعظم نریندر مودی کے ساتھ ملاقات کی۔میٹنگ کے دوران وزیر اعلیٰ نے وزیر اعظم کو ریاست جموں وکشمیر کی مجموعی صورتحال کے بارے میں آگاہ کیا۔انہوں نے وزیر اعظم سے کہا کہ جموں وکشمیر کے عوام پچھلی کئی دہائیوں کے نامساعد حالات سے بُری طرح سے متاثر ہورہے ہیں۔محبوبہ مفتی نے سرحدوں پر تشدد کے حالیہ بڑھتے واقعات کے بارے میں وزیر اعظم کو جانکاری دی۔اس کی وجہ سے ہزاروں لوگوں کو اپنے گھر بار چھوڑنے کے ساتھ ساتھ اپنے معمول کا کام کاج چھوڑنا پڑا ہے۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ وقت کی ضرورت ہے کہ تشدد اور غیر یقینیت کے تناؤ کو کم کیا جانا چاہئے اور افہام و تفہیم کے راستے کو اپنایا جانا چاہئے جس کا نظریہ موجودہ حکومت کے ایجنڈا آف الائنس میں بھی درج ہے تا کہ ریاست اور برصغیر میں دیرپا امن کے قیام کو یقینی بنایا جاسکے۔میٹنگ کے دوران ایجنڈاآف الائنس پر بھی تفصیلی تبادلہ خیال ہوا اور ضرورت محسوس کی گئی کہ تمام شعبوں میں معیاد بند مدت کے اندر ترقی کو یقینی بنایا جانا چاہئے جن میں گرؤپوں، خطوں اور ممالک کے درمیان افہام و تفہیم کے عمل کو بڑھاوا دینے کے ساتھ ساتھ بجلی پروجیکٹوں کی واپسی جیسے امور شامل ہیں۔میٹنگ میں دونوں حکمران پارٹیوں پی ڈی پی اور بی جے پی کے درمیان موثر تال میل کی ضرورت پر بھی زور دیا گیا تا کہ ریاستی عوام تک بہتر نتائج پہنچائے جاسکیں۔محبوبہ مفتی نے وزیر اعظم کو ریاست میں ایک لاکھ کروڑ روپے کے وزیر اعظم ترقیاتی پیکج کی عمل آوری کے بارے میں بھی جانکاری دی۔ انہوں نے عوام تک رسائی اور اس پیکج کے فوائد بنیادی سطح پر لوگوں تک پہنچانے کی اہمیت کو بھی اُجاگر کیا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں