بھارت اور پاکستان کے درمیان جاری سرحدی کشیدگی - حریت’ع‘ نے پورے خطے کی مجموعی صورتحال کیلئے خطرناک قراردی

سرینگر/حریت کانفرنس’ع‘ نے بھارت اور پاکستان کے درمیان جاری سرحدی کشیدگی کو اس پورے خطے کی مجموعی صورتحال کیلئے انتہائی خطرناک قرار دیتے ہوئے عالمی برادری سے اپیل کی ہے کہ وہ دونوں ممالک کے مابین کشیدہ صورتحال کے خاتمہ کے لئے آگے آئیں۔بیان میں کہا گیاکہ سرحدی کشیدگی کی وجہ سے سرحدوں پر رہ رہے ہزاروں کی تعداد میں لوگ نقل مکانی پر مجبور ہو رہے ہیں اور سرحدوں پر جاری شدید گولہ باری کی وجہ سے نہ صرف آر پار قیمتی جانوں کا زیاں ہو رہا ہے ، سرحدوں پر دہشت کا ماحول پید اہو گیا ہے ، لوگ محفوظ مقامات کا رُخ کررہے ہیں بلکہ دونوں جوہری مملکتوں کے درمیان موجودہ کشیدگی کسی بڑے خطرے کا پیش خیمہ ثابت ہو سکتی ہے ۔بیان میں کہا گیا کہ اس حقیقت سے انکار نہیں کیا جاسکتا کہ گزشتہ سات دہائیوں سے دونوں ہمسایہ جوہری مملکتوں کے درمیان تنائو کی بنیادی وجہ مسئلہ کشمیر رہا ہے اور جب تک اس مسئلہ کو یہاں کے عوام کی خواہشات اور امنگوں کے مطابق حل نہیں کیا جاتا جاری کشیدہ صورتحال سے چھٹکارا بہت مشکل ہے ۔۔دریں اثنا حریت ترجمان نے حریت چیرمین میرواعظ کی ایک بار پھر خانہ نظر بندی ،انکی پر امن سرگرمیوں پر قدغن عائد کئے جانے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ حکمران طبقہ آئے روز کسی نہ کسی بہانے حریت چیرمین کی پر امن سرگرمیوں کو طاقت کے بل پر مسدود کرنے کی پالیسی پر گامزن ہے اور ایسا لگ رہا ہے کہ حکمرانوں نے میرواعظ کی سرگرمیوں کو محدود کرنے کی معاندانہ پالیسی اپنا رکھی ہے جو حد درجہ افسوسناک اور قابل مذمت ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں