اپوزیشن کے ہنگامہ کی وجہ سے راجیہ سبھا کی کارروائی دو مرتبہ ملتوی

ترنمول کانگریس اور تیلگو دیشم پارٹی کے ممبران پارلیمنٹ کا احاطہ میں احتجاجی مظاہرہ
نئی دہلی/6فروری ﴿یو این آئی﴾ راجیہ سبھا چلانے کے طور طریقوں پر آج اپوزیشن جماعتوں کے اراکین نے لنچ کے و قفہ کے بعد زبردست شورو غل کیا جس کی وجہ سے ایوان کی کارراوائی کچھ دیرکے لئے ملتوی کرنی پڑی۔اس سے پہلے صبح ایوان کی کارروائی شروع ہوتے ہی مغربی بنگال سے وابستہ ایک معاملہ پر ترنمول کانگریس کے اراکین شور کی وجہ سے ایوان کی کارروائی دو منٹ کے اندر ہی لنچ کے وقفہ تک کے لئے ملتوی کردی گئی تھی۔ ایوان کی کارروائی دوسری مرتبہ شروع ہونے پرازپوزیشن کے لیڈر غلام نبی آزاد نے کہاکہ ایوان اصول اور ضابطہ سے چلتا ہے ۔ آج گیارہ بجے وقفہ صفر اور بارہ بجے وقفہ سوالات ہونا تھا اور اراکین اس میں حصہ لینا چاہتے تھے لیکن یہ دونوں نہیں ہوسکے اور اس طرح ہماری آواز دبائی جارہی ہے ۔ اس کے خلاف ہماری پارٹی پورے دن کے لئے ایوان کا بائیکاٹ کرتی ہے ۔ ڈپٹی چیرمین پی جے کورئین نے کہا کہ ایوان میں چیرمین کی رولنگ کی تنقید نہیں کی جاسکتی۔ چیرمین اور تمام فریق صحیح طریقہ سے ایوان چلانا چاہتے ہیں ۔ ایوان چلانے کے تعلق سے سوچ میں فرق ہوسکتا ہے ۔ تمام لیڈر اس معاملے میں چیرمین سے ان کے کمرے میں بات چیت کرسکتے ہیں۔ دریں اثنائ ترنمول کانگریس پارٹی کے ممبران پارلیمنٹ نے تیل کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کی مخالفت میں اور این ڈی اے اتحاد میں شامل تیلگو دیشم پارٹی کے ممبران پارلیمنٹ نے آندھرا پردیش میں ریلوے زون بنانے کی مانگ کو لے کر پارلیمنٹ کی کارروائی شروع ہونے سے پہلے آج پارلیمنٹ کے احاطہ میں بابائے قوم مہاتما گاندھی کے مجسمہ کے سامنے مظاہرہ کیا۔ لوک سبھا میں ترنمول کانگریس کے لیڈر سدیپ وندھو اپادھیائے نے کہا کہ پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں آسمان چھورہی ہیں جس کی وجہ سے لوگوں کا جینا دوبھر ہوگیا ہے ۔ انہوں نے فورا تیل کی بڑھی ہوئی قیمتوں کو واپس لینے کا مطالبہ کیا۔ پارٹی نے مڈڈے میل کے معاملہ پر بھی سرکار کی نکتہ چینی کی اور کہا کہ اسے صحیح طریقہ سے نافذ نہیں کیا جارہا ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں