کنڑول لائن پر آر پار گولہ باری جاری فائرنگ سے زخمی خاتون دم توڑ بیٹھی ، ہلاکتوں کی تعداد ۴۱تک پہنچ گئی

سرینگر/سی این آئی/ لائن آف کنٹرول پرآر پار گولہ باری کے بیچ گزشتہ دنوں پاکستانی فائرنگ سے زخمی ہونے والی ایک اور خاتون اسپتال میں دم توڑ بیٹھے جس دوران مرنے والوں کی تعداد 14تک پہنچ گئی ہے ۔ ادھر پونچھ سیکٹر میں اتوار کی علی الصبح فائرنگ اور ماٹر شلنگ کا شدید تبادلہ ہوا جس دوران کئی ڈھانچوں کو شدید نقصان پہنچ گیا جبکہ تین شہری زخمی بھی ہوگئے ۔ دفاعی ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ لائن آف کنٹرول پر ایک ہفتے سے تنائو وکشیدگی کی صورتحال میں مزید شدت آئی ہے ،کیو نکہ برصغیر کی دوایٹمی طاقتوں کی افواج کے درمیان گولہ باری تھمنے کا نام نہیں لے رہی ہے۔طرفین کے مابین تازہ گولہ باری کا تبادلہ پونچھ سیکٹر میںاتوار کی صبح پیش آیا۔دفاعی ترجمان نے بتایا کہ پاکستانی فوج نے اتوارکی اعلی الصبح پونچھ سیکٹر میں بھارتی فوج کی چوکیوں کو نشانہ بناکر بلااشتعال اور شدید فائرنگ کی گئی‘۔ انہوں نے بتایا کہ بھارتی فوج نے جوابی فائرنگ کی اور طرفین کے مابین گولہ باری کا تبادلہ قریب آدھے گھنٹے تک جاری رہا۔ ذرائع نے بتایا ’گولہ باری اور شل رہائشی علاقوں میں جا گرے جس کے نتیجے میں کئی رہائشی ڈھانچوں کو نقصان پہنچ گیا ۔ دفاعی ذرائع نے بتایا کہ پاکستانی افواج نے بھارتی چوکیوں کے علاوہ درجنوں رہائشی علاقوں کو بھی نشانہ بنا کر ان پر فائرنگ کی جس کا بھارتی فوج نے بھر پور انداز میں جواب دیا ۔ادھر دفاعی ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ کنہ چک علاقے میں 22جنوری کو پاکستان کی شدید فائرنگ سے زخمی ہونے والی 35سالہ خاتون بملہ دیو اسپتال میں کئی دنوں تک موت و حیات کی کشکش میں مبتلا رہنے کے بعد زندگی کی جنگ ہار گئی ہے جس کے ساتھ ہی پاکستانی فائرنگ سے مرنے والوں کی تعداد 14تک پہنچ گئی ہے ۔ ادھر میڈیا رپورٹس کے مطابق پاکستان پر سرجیکل سٹرائیک کے بعد بھارتی فوج نے ایل او سی پر سکیورٹی کے پیش نظر اپنی فوج تعینات کر دی ہے۔میڈیا رپورٹس میں بھارت کے حفاظتی ترجمان کا حوالہ دیتے ہوئے سرجیکل سٹرائیک کی بات عام ہونے کے بعد پاکستانی فوج نے خود کو مستحکم ثابت کرنے کی کوشش کر تے ہوئے کہا کہ وہ سٹرائیک کے رد عمل میں کبھی بھی حملہ کر سکتی ہے، اس خدشہ کے پیش نظر یہ تعیناتی کی گئی ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں