شوپیان میں خونریز جھڑپ، ایک شہری اور دو جنگجو جاں بحق

جنگجو مخالف اوپریشن کے دوران فورسز کی فائرنگ 3/ نوجوان اور 2لڑکیاں زخمی، دونوں کی حالت نازک - فورسز کی گولیوں سے زخمی ہونے والا قلم پورہ کا شاکر احمد ہسپتال پہنچنے سے قبل ہی دم توڑ بیٹھا
شوپیان/ نیازحسین/کے این ایس/’’جنگجومخالف آپریشن کیخلاف شدیدعوامی مزاحمت ‘‘کے دوران شوپیان کے مضافاتی گائوں میں فورسزکی فائرنگ کے نتیجے میں 17سالہ معصوم نوجوان جاں بحق ہوگیاجبکہ گولیوں اورپیلٹ فائرکی زدمیں آکر2نوعمرلڑکوں اور2جواں سالہ لڑکیوں سمیت دیگرکئی افراد زخمی ہوگئے ۔ اس دوران پولیس کے سر براہ ڈاکٹر ایس پی وید نے معرکہ آرائی کے دوران 2جنگجوئوں کو جاں بحق کر نے کا دعویٰ کر تے ہو ئے کہا کہ ان کے قبضے سے بھاری مقدار میں اسلحہ بر آمد کیا گیا۔انہوں نے کراس فائرنگ کے نتیجے میں ایک کمسن نو جوان کی ہلاکت کو بد قسمتی سے تعبیر کیا ۔اس دوران ضلع پلوامہ کے نونگری چندگام علاقہ میں بھی جنگجومخالف کارروائی کی مزاحمت کرنے والے مظاہرین اورفورسزکے درمیان شدیدتصادم آرائی ہوئی اوریہاں بھی کچھ مظاہرین کے زخمی ہوجانے کی اطلاع ہے۔جنگجوئوں کی موجودگی سے متعلق اطلاع ملتے ہی فوج ،فورسزاورریاستی پولیس کی ٹاسک فورس ونگ کے اہلکاروں نے بدھ کوبعددوپہرپہاڑی ضلع شوپیان کے چھے گنڈڈیرئوگائوں کومحاصرے میں لیکرجنگجومخالف آپریشن شروع کیا۔بتایاجاتاہے کہ آپریشن کے تحت تلاشی کارروائی کاسلسلہ شروع ہوتے ہی مقامی اورنزدیکی کچھ دیہات کے نوجوان سڑکوں پرنکل آئے اورانہوں نے جنگجومخالف کارروائی میں مصروف سیکورٹی اہلکاروں پرشدیدسنگباری شروع کی جبکہ ہجوم نے جائے مقام تک پہنچنے کی کوشش بھی کی ۔بتایاجاتاہے کہ فوج ،فوورسزاورٹاسک فورس نے جنگجومخالف مشترکہ دستے میں شامل اہلکاروں اورپولیس نے مشتعل نوجوانوں کومنتشرکرنے کیلئے پہلے ٹیرگیس شلنگ اورپیلٹ فائرنگ کی لیکن جب اسکے باوجودمشتعل نوجوان سنگباری پرڈٹے رہے توسیکورٹی اہلکاروں نے اُن پرراست گولی باری کردی ،جسکے نتیجے میں کم سے کم تین نوعمرنوجوانوں کے اجسام میں گولیاں پیوست ہوگئیں اوراُنکونزدیکی صحت مرکزمنتقل کیاگیا۔مقامی لوگوں نے فوج وفورسزپرنوجوانوں کیخلاف طاقت کابے تحاشہ استعمال کئے جانے کاالزام لگاتے ہوئے کہاکہ گولیاں لگنے سے شدیدطورپرزخمی ہوئے تین لڑکوں میں سے 17سال کاایک لڑکاجاں بحق ہوگیا۔اُدھرپولیس ودفاعی ذرائع نے بتایاکہ آپریشن شروع ہوتے ہی محصورگائوں میں پھنسے جنگجوئوں نے فرارہونے کی کوشش کے تحت سیکورٹی اہلکاروں پرفائرنگ شروع کردی جسکابروقت جواب دیاگیا۔ذرائع کے مطابق جنگجوئوں اورفورسزکے درمیان گولیوں کاتبادلہ شروع ہوتے ہی یہاں ایک ہجوم نے جنگجومخالف آپریشن میں خلل ڈالنے کی کوشش کی اوراُنھیں منتشرکرنے کیلئے طاقت کاکم سے کم استعمال کیاگیا۔اُدھر پرائمری ہیلتھ سینٹرواقع راجپورہ پلوامہ میں تعینات طبی ونیم طبی عملہ میں شامل کچھ ڈاکٹروں اورملازمین نے بتایاکہ بدھ کی سہ پہریہاں کم سے کم تین ایسے نوجوانوں کوزخمی حالت میں لایاگیاجن کوگولیاں لگی تھیں ۔انہوں نے بتایاکہ ان میں سے ایک نوجوان 17سالہ شاکراحمدمیرساکنہ قلم پورہ شوپیاں زخموں کی تاب نہ لاکردم توڑبیٹھا۔انہوں نے بتایاکہ مذکورہ نوعمرنوجوان راستے میں بے تحاشہ خون بہہ جانے کے نتیجے میں دم توڑچکاتھااورجب ڈاکٹروں نے یہاں اُسکامعائنہ کیاتوانہوں نے اُسے مردہ قراردے دیا۔اسپتال ذرائع کے مطابق مزیددوزخمی نوجوانوں کوبھی یہاں لایاگیا۔بلاک میڈیکل آفیسرجاویداحمدکاکہناتھاکہ پرائمری ہیلتھ سینٹرراجپورہ دوزخمیوں کویہاں داخل کیاگیاجن کی حالت مستحکم ہے ۔اُدھر17سالہ شاکرکے جاں بحق ہوجانے کی خبرپہنچتے ہی شوپیان کے محصورگائوں چھے گنڈمیں صورتحال مزیدبگڑگئی اوریہاں مشتعل مظاہرین وفورسزکے درمیان جھڑپوں میں شدت پیداہوئی ۔بتایاجاتاہے کہ مظاہرین کومنتشرکرنے کیلئے فورسزکی کارروائی کے دوران 2لڑکیوں سمیت مزیدکئی افرادزخمی ہوگئے ۔معلوم ہو/جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
اکہ زخمی ہوجانے والی دونوں لڑکیوں کوضلع اسپتال پلوامہ پہنچایاگیاجہاں سے انکونازک حالت میں سرینگرمنتقل کیاگیا۔بتایاجاتاہے کہ فورسزکی فائرنگ کے نتیجے میں زخمی ہوجانے والے دونوں جواں سالہ لڑکیوں کاتعلق اوڈئوشوپیاں گائوں سے ہے ۔اس دوران نزدیکی ضلع پلوامہ کے نونگری چندگام علاقہ میں اسوقت پُرتشددمظاہرے شروع ہوئے جب بدھ کی سہ پہرفوج ،فورسزاورٹاسک فورس کے اہلکاروں نے محاصرے کرکے یہاں تلاشی کارروائی شروع کی ۔بتایاجاتاہے کہ کچھ جنگجوئوں کے یہاں موجودہونے کی اطلاع ملتے ہی فوج،فورسزاوراٹاسک فورس اہلکاروں نے مشترکہ طورپرگائوں کومحاصرے میں لیکرجنگجومخالف آپریشن شروع کیا۔معلوم ہواکہ فورسزکی کارروائی شروع ہوتے ہی یہاں نوجوانوں گھروں سے باہرآئے اورانہوں نے سیکورٹی اہلکاروں پرسنگباری شروع کردی ۔مقامی لوگوں کے مطابق فورسزکی جوابی کارروائی میں کئی مظاہرین زخمی ہوگئے ۔ادھر پولیس کے سر براہ ڈاکٹر ایس پی وید نے سماجی رابطے کی سائٹ ٹویٹر پر معرکہ آرائی کے دوران 2جنگجوئوں کو جاں بحق کر نے کا دعویٰ کر تے ہو ئے کہا کہ ان کے قبضے سے بھاری مقدار میں اسلحہ بر آمد کیا گیا۔انہوں نے کراس فائرنگ کے نتیجے میں ایک کمسن نو جوان کی ہلاکت کو بد قسمتی سے تعبیر کیا ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں