لوگ بٹکوائن کا خطرہ اپنے طور پر اٹھائیں :جیٹلی

نئی دہلی/یو این آئی/ ملک میں کریپٹو کرنسی بٹکوائن کے بڑھتے چلن پر کل حکومت نے ایک بار پھر واضح کیا کہ یہ قانونی طور پر تسلیم شدہ کرنسی نہیں ہے اور حکومت کی جانب سے لوگوں کو کسی طرح کی بھرپائی نہیں کی جائے گی۔ وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے راجیہ سبھا میں اضافی سوالات کے جواب میں کہا کہ ریزرو بینک اور حکومت پہلے بھی یہ کہہ چکی ہے اور وہ آج پھر یہ واضح کرنا چاہتے ہیں کہ بٹکوائن جیسی مجازی کرنسی قانونی طور پر درست نہیں ہے اور نہ حکومت کا اسے جائز کرنسی بنانے کا کوئی خیال ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس میں دھوکہ کھانے والوں کو حکومت کسی طرح کی بھرپائی نہیں کرے گی اور اس کرنسی میں لین دین کرنے والے لوگ خود ہی اس کا خطرہ اٹھائیں گے ۔ کریپٹو کرنسی پر نکیل کسنے کے اقدامات سے متعلق سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ حکومت جلد بازی میں کوئی قدم نہیں اٹھائے گی۔ ان معاملات کی باریکي سے چھان بین کی جا رہی ہے اور اس کے لئے اقتصادی شعبہ کے سکریٹری کی قیادت میں ایک ایکسپرٹ کمیٹی قائم کی گئی ہے جو پورے معاملے کا مطالعہ کر رہی ہے ۔ حکومت اس کمیٹی کی رپورٹ کا انتظار کر رہی ہے اور اس کے بعد ہی ٹھوس کارروائی کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ صرف ہندوستان ہی اس مسئلہ کا سامنا نہیں کر رہا ہے ۔ دنیا بھر میں 785قسم کی کریپٹو کرنسی ہیں جو مختلف ممالک کے لئے تشویش کا سبب بنی ہوئی ہیں۔ حکومت ان ممالک میں کئے جا رہے اقدامات کا بھی مطالعہ کر رہی ہے اور اس کے بعد اس سے نمٹنے کے لئے مناسب کارروائی کی جائے گی۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں