مخلوط سرکار میں عوام کا کوئی پرسانِ حال نہیں بجلی کا بحران شدید، حکام بجلی پروجیکٹ واپس لانے کا وعدہ پورا کریں: ڈاکٹر کمال

سرینگر//نیشنل کانفرنس نے موجودہ مخلوط حکومت کو لتاڑتے ہوئے کہا ہے کہ پی ڈی پی بھاجپا سرکار میں عوام کا کوئی پرسانِ حال نہیں، حکومت کا زمینی سطح پر کہیں نام و نشان نہیں، وزرائ صرف اپنی تشہیر کرنے میں مصروف ہیں اور انتظامیہ مفلوج ہو کر رہ گئی ، مخلوط حکومت میں شامل دونوں جماعیتیں اقربا پروری اور اقربا نوازی میں مصروف ہیں جبکہ بجلی کی ریکارڈ توڑ کٹوتی جاری ہے۔ پارٹی کے معاون جنرل سکریٹری ڈاکٹر شیخ مصطفےٰ کمال نے عوامی معاملات کے تئیں حکومت کی بے حسی پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ پی ڈی پی بھاجپا مخلوط حکومت مصروف ہے اور عوام مشکلات کی چکی میں پس رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اقتدار پر براجمان دونوں جماعتوں نے حکومت سنبھالنے سے ابھی تک صرف افسران اور اہلکاروں کے تبادلے اور اپنے/جاری صفحہ نمبر۱۱پر
 اقربا اور پارٹی کارڈ کی بازآبادکاری عمل میں لائی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی پی حکومت شروعات میں ہی اوندھے منہ گر گئی ہے ، جس کی وجہ سے ریاست میں جیسے سرکاری نظام رک سا گیا ہے،ڈیولپمنٹ کا کہیں نام و نشان نہیں۔ڈاکٹر کمال نے کہا کہ بلند بانگ دعوے کرنے والی پی ڈی پی حکومت نے بجلی فیس میں دوگنا اضافہ کیا ہے جبکہ بجلی کی سپلائی میں ذرا برابر بھی بہتری نہیں آئی ہے الٹا بجلی سپلائی بد سے بدتر ہوتی جارہی ہے۔ پی ڈی پی نے بھاجپا کے اتحاد کرنے کے وقت ایجنڈا آف الائنس کا ڈنڈورا پیٹا اور لوگوں کو بتایا گیا کہ مرکزی سے معاہدے کے مطابق بجلی پروجیکٹ واپس لئے جائیں گے لیکن 3سال گزر جانے کے باوجود ایجنڈا ایسے ہوتا دکھائی نہیں دے رہا ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں