ناقص ٹریفک نظام سے لوگ مشکلات سے دوچار- سرِ شام ہی سڑکوں سے گاڑیاں غائب، حکام خاموش تماشائی

سرینگر/ناقص ٹریفک نظام کے باعث ریاست خاص کرو ادی کے لوگوں کو شدید مصائب ومشکلات کا سامنا کرناپڑرہا ہے اگر چہ حکام کی نوٹس میں بار بار ٹریفک جام ، ناقص ٹریفک نظام کے بارے میں آگاہ کیا گیا تاہم انتظامیہ ٹس سے مس نہیں ہو رہی ہے  پوری وادی میں ٹریفک جام ، لوگوں کے چلنے پھرنے میں مشکلات پید اہو گئے ہیں جبکہ کسی بھی قصبے یا بڑے شہرئوںمیں چھوٹی مسافر بردار گاڑیوں کیلئے سٹینڈ دستیاب نہ ہونے کے باعث مسافروں کو شدید عذاب سے گزرنا پڑ رہا ہے جبکہ ناقص ٹریفک نظام کے باعث وادی کے لوگوں کو ایک جگہ سے دوسری جگہ جانے کیلئے سورج غروب ہونے کے بعد گاڑیاں دستیاب نہیں ہوتی ہیں۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق محکمہ ٹرانسپورٹ کی بنیادیں اس قدر کھوکھلی ہو چکی ہیں کہ یہ کسی بھی وقت زمین بوس ہو سکتا ہے اور اس محکمہ کی کارکردگی میں نکھار لانے کیلئے نئی روح نہیں پھونکی جا رہی ہے جس کی وجہ سے وادی کے مسافروں کو شدید عذاب سے گزرناپڑرہا ہے۔ شہر سرینگر میں اگر باریک بینی سے جائزہ لیا جائے تو پانتھ چوک کے نزدیک ایک بس اسٹینڈ قائم کیا گیا ہے اور بتہ مالو میں ایک جبکہ 407، ٹاٹا گاڑیوں، مزدا، ٹاٹا سومو ، آٹو رکشائوں اور دوسری چھوٹی مسافر بردار گاڑیوں کیلئے کسی بھی جگہ سٹینڈ دستیاب نہیں ہیں اور آئے دن چھوٹی مسافر بردار گاڑیوں کیلئے بے تحاشہ پرمٹ اجرا کئے جاتے ہیں جس کی وجہ سے سڑکوں پر ٹریفک دباو میں مزید اضافہ ہو جاتا ہے اور ٹریفک جام ہونے کے باعث راہ چلتے لوگوں کا چلنا پھرنا مشکل ہونے کے ساتھ ساتھ حاد ثات بھی رونما ہو تے ہیں اور اس طرح کی صورتحال سے نمٹنے میں اگر چہ حکومت نے بار بار یقین دلایا کہ ریاست خاص کر وادی کشمیر میں مضبوط مستحکم ٹرانسپورٹ پالیسی اختیار کی جائے گی تاکہ وادی کے مسافروں کو مشکلات کا سامنا نہ کرناپڑے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں