ایران یمن میں قیامِ امن میں ناکامی کا ذمہ دار ہے: سعودی عرب

ریاض/ سعودی عرب نے ایران پر ایک مرتبہ پھر حوثی باغیوں کی حمایت اور مدد کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ یمن میں قیامِ امن کی کوششوں میں رکاوٹیں پیدا کر رہا ہے۔ سعودی عرب کی جانب سے یہ بیان اتوار کو دارالحکومت ریاض میں سعودی اتحاد میں شامل ممالک کے وزرائے خارجہ کے ایک اجلاس میں سامنے آیا ہے۔ اس اجلاس میں مصر، بحرین اور متحدہ عرب امارات کے وزرائے خارجہ کے علاوہ فوجی حکام بھی شریک تھے۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر نے ایران پر حوثی باغیوں کو اسلحہ فراہم کرنے کا الزام عائد کیا۔ واضح رہے کہ یمن کے دارالحکومت صنعا اور شمالی یمن پر حوثی باغیوں کا کنٹرول ہے۔ سعودی وزیر خارجہ نے کہا کہ ایران یمن کے مسئلے کے حل کے لیے تمام کوششوں کو تباہ کر رہا ہے اور اسی وجہ سے حکومت اور ملیشیا کے درمیان سیاسی مذاکرات کی تمام کوششیں ناکام ہوئی ہیں۔‘ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ’یہ ملیشیا اپنی کارروائیاں دنیا میں دہشت گردی کے سب سے بڑا معاون ایران کی حمایت کے بغیر جاری نہیں رکھ سکتی۔یمن کے وزیر خارجہ عبدالمالک نے اجلاس کو بتایا کہ حوثی باغی ایران کے اثر کے باعث فرقہ وارانہ منصوبہ چلا رہے ہیں جس کا مقصد یمنی حکومت کا تختہ اُلٹنا ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں