رافیل سودے کی دلالی کی 284کروڑ روپے کی پہلی قسط انل امبانی تک پہنچ گئی :راہل

نئی دہلی ﴿یو این آئی﴾ کانگریس کے صدر راہل گاندھی نے رافیل طیارے سودے کے سلسلے میں وزیر اعظم نریندر مودی پر ایک بار پھر نشانہ لگاتے ہوئے جمعہ کو الزام لگایا کہ اس میں ہونے والی بدعنوانی میں ان کی براہ راست شرکت ہے اور دلالی کی 284کروڑ روپے کی پہلی قسط ان کے پسندیدہ صنعت کار انل امبانی تک پہنچ گئی ہے ۔ مسٹر گاندھی نے یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر میں اچانک بلائی گئی پریس کانفرنس میں کہا کہ اس سودے میں ہونے والی بدعنوانی کی پہلی قسط کی ادائیگی انل امبانی کی کمپنی میں سرمایہ کاری کے ذریعے کی جارہی ہے ۔ انہوں نے سوال کیا کہ فرانسیسی طیارہ ساز دار داسالسٹ نے 8.30لاکھ روپے کے نقصان والی کمپنی میں 284کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کس بنیاد کیا گیا ہے ۔کانگریسی صدر کا یہ تبصرہ میڈیا میں ایک دن پہلے شائع ان خبروں کے بعد آیا ہے جن میں کہا گیا ہے کہ رافیل طیارے بنانے والی فرانس کی دسالٹ کمپنی نے انل امبانی کی کمپنی میں زمین خریدنے کیلئے 284کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کی ہے ۔ مسٹر گاندھی نے کہا کہ مسٹر مودی اور امبانی کے علاوہ اس سودے کی کسی اورکو معلوم نہیں ہے ۔ اس وقت کے وزیر دفاع منوہر پریکرسے پوچھا گیا، وہ اس کا وہ براہ راست جواب نہیں دیتے ۔ان کے جواب سے صاف ہے کہ انہیں سودے کی کوئی معلومات نہیں تھی۔ان کے بیان سے بھی واضح ہے کہ مسٹر مودی نے خود اس معاہدے کو انجام دیا ہے اور کسی بھی عمل کو اختیار کئے بغیر اپنے پسندیدہ صنعت کار کوفائدہ پہنچایاہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں