ہنگامے کی وجہ سے راجیہ سبھا تیسرے دن بھی ٹھپ

نئی دہلی، 7مارچ ﴿یو این آئی﴾ پبلک سیکٹر کے بینکوں میں گھوٹالے ، آندھرا پردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے اور پریار کے مجسمہ کے ساتھ توڑ پھوڑ کئے جانے کے مسائل پر ہنگامے کی وجہ سے راجیہ سبھا کی کارروائی آج مسلسل تیسرے دن ٹھپ رہی اور کوئی کام کاج نہیں ہوسکا۔ ان مسائل پر ہنگامہ کر نے والے ارکان نے صبح سے ہی ایوان کی کارروائی نہیں چلنے دی اور وقفے کے بعد کارروائی دن بھر کیلئے ملتوی کر دی گئی۔وقفے کے بعد ڈپٹی چیئرمین پی جے کورین نے جیسے ہی کارروائی شروع کرنی چاہی، تو کانگریس، ترنمول کانگریس، اے آئی ڈی ایم کے ، ڈی ایم اور تیلگودیشم کے رکن نشست صدر کے قریب آکر نعرے بازی کرنے لگے ۔ مسٹر کورین نے کہا کہ وہ بینک گھوٹالوں کے معاملے پر مختصر بحث شروع کرانے کو تیار ہیں لیکن کانگریس کا کہنا تھا کہ اس پر ضابطہ 267کے تحت بحث کرائی جانی چاہئے ۔ اس پر مسٹر کورین تیار نہیں ہوئے اور انہوں نے مختصر بحث شروع کرنے کی بات کہی ۔اس درمیان نشست صدر کے قریب موجود ارکان نے ہنگامہ جاری رکھا۔ پارلیمانی امور کے وزیر مملکت وجے گوئل نے بھی کہا کہ حکومت بحث کے لئے تیار ہے لیکن اپوزیشن رکن اپنی بات پر اڑے رہے ۔ ایوان میں ہنگامے کا ماحول دیکھتے ہوئے مسٹر کورین نے دو منٹ میں ہی کارروائی دن بھر کے لئے ملتوی کر دی۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں