جماعت الدعوۃ سمیت کالعدم تنظیموں کیلئے عطیات اور چندہ جمع کرنے پر پابندی کا حکم جاری

اسلام آباد/ پاکستان میں فلاح انسانیت فاؤنڈیشن اور جماعت الدعوۃ سمیت ان تمام تنظیموں کے لیے عطیات اور چندہ جمع کرنے پر پابندی کے احکامات جاری کیے گئے ہیں جو اقوام متحدہ کی دہشت گرد تنظیموں کی فہرست میں شامل ہیں یا انہیں عالمی ادارے کی جانب سے اس معاملے میں زیر نگرانی رکھا گیا ہے۔ وزارت داخلہ نے ایسے افراد کے کوائف اکٹھا کرنے کے احکامات جاری کیے ہیں جو ان تنظیموں کو بڑے عطیات دینے والوں میں شامل ہیں اور ان کے خلاف بھی کارروائی کی جائے گی۔ ادھر حکومت پاکستان کے ادارے سکیورٹی اینڈ ایکسچینج کمیشن ﴿ایس ای سی پی﴾ نے بتایا کہ وزارتِ خارجہ نے اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل کے القاعدہ اور اس کے ساتھ منسلک افراد پر اقتصادی اور سفری پابندیوں کے متعلق احکامات پر عمل درآمد کو قانونی شکل دینے کے لیے ایس آر او جاری کر دیا ہے۔ اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل کی طرف سے جاری کی گئی لسٹ ان کی ویب سائٹ پر دیکھی جا سکتی ہے۔ بیان کے مطابق حکومت پاکستان نے پہلے ہی پابندیوں کی نافرمانی کرنے والوں پر ایک کروڑ روپے تک جرمانہ رکھا ہوا ہے۔ سکیورٹی اینڈ ایکسچینج کمیشن نے اپنے نوٹیفیکیشن میں کہا ہے کہ کمپنیز ایکٹ 2017کے سکیشن 453 کے مطابق اب سبھی کمپنیوں کو حکم دیا گیا ہے کہ وہ ان اداروں اور افراد کو چندہ نہ دیں جن کا اقوامِ متحدہ ﴿یو این ایس سی﴾ کی اقتصادی پابندیوں کی کمیٹی کی لسٹ میں نام ہے۔ ایسی خبریں بھی آ رہی ہیں کہ حکومت نے جماعت الدعوۃ اور فلاح انسانیت فاونڈیشن کی ایمبولینسوں کواپنی تحویل میں لے لیا ہے۔ ان خبروں کی ابھی تک تصدیق تو نہیں ہو سکی ہے۔ اس سے قبل خبر رساں ادارے روئٹرز کی جانب سے شائع کی جانے والی رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ 19دسمبر کو پاکستانی وزارت خزانہ کی جانب سے جاری کی گئی ’خفیہ‘ دستاویز میں کہا گیا ہے کہ حافظ سعید کی دونوں تنظیموں کے خلاف 28دسمبر تک لائحہ عمل طے کیا جائے تاکہ ان پر’کنڑول‘کیا جا سکے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں