قومی طبی کمیشن بل پارلیمانی اسٹنڈنگ کمیٹی کے حوالے

نئی دہلی/یو این آئی/ لوک سبھا نے کل قومی طبی کمیشن بل 2017 کو قائمہ کمیٹی کے پاس بھیج دیا، جس میں میڈیکل کونسل کو بدل کر نیا ادارہ قائم کرنے کی تجویز ہے ۔ اسٹنڈنگ کمیٹی کو پارلیمنٹ کے بجٹ اجلاس سے پہلے ہی اس سلسلے میں اپنی رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا گیا ہے ۔ خیال رہے کہ ملک بھر میں ڈاکٹر اس بل کی تجاویز کے خلاف ہڑتال پر ہیں، جن میں متبادل اور روایتی طریقہ علاج سے کام کرنے والے ڈاکٹروں کو ایک برج کورس مکمل کرنے کے بعد ایلوپیتھی طریقہ علاج اپنانے کی اجازت دی گئی ہے ۔ لوک سبھا میں اپوزیشن پارٹیوں نے مطالبہ کیا کہ مجوزہ بل کو وزارت صحت اور بہبودی اطفال سے متعلق قائمہ کمیٹی کے پاس بھیجا جائے اور اس پر کمیٹی کی تفصیلی رائے لی جائے ۔ قائمہ کمیٹی کی سفارشات کے بعد ہی اس بل کو ایوان میں لایا جائے ۔ پارلیمانی امور کے وزیر اننت کمار نے ایوان میں اپوزیشن کے اس مطالبے پر اتفاق ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ حکومت میڈیکل کمیشن بل کو اسٹنڈنگ کمیٹی کے پاس بھیجنے کے خلاف نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ایوان کے متعدد اراکین کے مطالبے کو زیر غور لاتے ہوئے قومی طبی کمیشن بل کو پارلیمانی اسٹنڈنگ کمیٹی کے پاس بھیج دیا گیا ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں