نوجوان کھلاڑیوں کے کندھوں پر بڑی ذمہ داری :مودی- فیفا انڈر۔۷۱ ہندوستانی ٹیم نے وزیراعظم سے ملاقات کی

نئی دہلی/ وزیر اعظم نریندر مودی نے فیفا انڈر 17ورلڈ کپ میں حصہ لینے والی ہندوستانی فٹ بال ٹیم کے کھلاڑیوں سے کل ملاقات کی ۔انہوں نے ان نوجوان کھلاڑیوں کا جوش اور ولولہ بڑھاتے ہوئے کہا کہ ان کے شانوں پر مستقبل کی بڑی ذمہ داری ہے ۔وزیراعظم نے پہلی مرتبہ ہندوستان کی میزبانی میں ہوئے فیفا ورلڈ کپ میں حصہ لینے والی انڈر 17ٹیم کو وزیر اعظم کے دفتر میں مدعو کیا تھا۔یہ ٹیم اے ایف سی انڈر۔19چیمپئن شپ کوالیفائرس میں شرکت کرکے سعودی عرب سے لوٹی ہے ۔مسٹر مودی نے کہاکہ میں نے ذاتی طور پر اس میٹنگ کیلئے کہا تھا کیونکہ میں نے آپ کے اندر کچھ کر گزرنے کا جذبہ دیکھا ہے ۔ آپ کی کارکردگی کے بعد لوگ آپ سے واقف ہونے لگے ہیں اور آپ کے کندھوں پر ایک بڑی ذمہ داری آگئی ہے ۔ فیفا اندر۔۷۱ عالمی کپ میں حصہ لینے والی ہندوستانی فٹ بال ٹیم نے آج یہاں وزیراعظم نریندر مودی سے ملاقات کی اور ٹورنامنٹ سے متعلق اپنے تجربے کے سلسلے میں بات چیت کی۔ مسٹر مودی نے اس دوران کھلاڑیوں کا حوصلہ بڑھایا اور کہا کہ ٹیم پورے ٹورنامنٹ میں جوش اور کھیل جذبے کے ساتھ کھیلی ہے ۔ ہندوستان کو اپنی میزبانی میں اس ٹورنامنٹ میں تین شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا اور ٹیم پہلے ہی راونڈ میں باہر ہوگئی تھی۔ وزیراعظم نے کھلاڑیوں کے ساتھ ملاقات کے دوران ان کا حوصلہ بڑھایا اور کہا کہ انہیں ٹورنامنٹ کے نتائج سے مایوس نہیں ہونا چاہیے بلکہ سبق حاصل کرنا چاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ کھلاڑیوں میں اعتماد پیدا کرکے ہندوستان فٹ بال میں کافی کچھ حاصل کرسکتا ہے ۔فیفا انڈر ۷۱ ہندوستانی ٹیم کے کھلاڑیوں نے بھی ٹورنامنٹ کے دوران میدان کے اندر اور باہر کے تجربوں کو مسٹر مودی کے ساتھ اشتراک کیا۔
سنگاپور/ سرکردہ ٹینس کھلاڑی سوئٹزر کی مارٹینا ھنگس کی شکست کے ساتھ بین الاقوامی ٹینس سے وداعی ہو گئی۔سوئس اسٹار ھنگس اور ان کی جوڑی دار تائیوان کی چان یونگ جان کو سیزن کے آخری ٹینس ٹورنامنٹ ڈبلیوٹی اے فائنلس کے سیمي فائنل میںکل تمیا بابوس اور اندریا لاواکووا نے شکست دے کر فائنل میں داخلہ حاصل کر لیا۔ہنگس نے اپنے شاندار کیریئر میں 25 گرینڈ سلیم خطاب جیتے ، جس میں پانچ سنگلز اور 20 ڈبلز شامل ہیں ۔ ھنگس نے میچ کے بعد کہاکہ بلاشبہ ٹورنامنٹ کا اس طرح اختتام کرنا مایوس کن ہے ۔مجھے یقین ہے کہ ہم دونوں اس سے بہتر اختتام چاہتے تھے یعنی ٹرافی جیتنا، لیکن ہم آج اچھی کارکردگی نہیں کر پائے ۔وہ 1990 کی دہائی میں ایک

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں